ایم ٹی آئی کیخلاف پمز ملازمین  کا بنی گالا کے سامنے احتجاج کا اعلان 

ایم ٹی آئی کیخلاف پمز ملازمین  کا بنی گالا کے سامنے احتجاج کا اعلان 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


 اسلام آباد(سٹاف رپورٹر) حکومت کی جانب سے پاکستان انسٹیٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز (پمز)ہسپتال کو میڈیکل ٹیچنگ انسٹیٹیوٹ (ایم ٹی آئی)میں تبدیل کرنے کے فیصلے کے خلاف ہسپتال کے ملازمین جاری احتجاج کو40روز مکمل ہو گئے،پمز ملازمین نے تمام نان کلینکل سروسز کے دفاتر بند کروا دئیے ۔پمز ملازمین نے ای ڈی آفس کا گھیراؤ کیا اور شدید نعرے بازی کی۔احتجاجی ملازمین نے آئندہ بدھ کو وزیر اعظم کی رہائش گاہ بنی گالا کے سامنے احتجاج کا اعلان کر دیا۔تفصیلات کے مطابق پاکستان انسٹیٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز (پمز)ہسپتال کو میڈیکل ٹیچنگ انسٹیٹیوٹ (ایم ٹی آئی)میں تبدیل کرنے کے فیصلے کے خلاف پمز ملازمین کے جاری احتجاج کو 40 روز مکمل ہوگئے۔پمز ملازمین کی جانب سے تمام نان کلینکل سروسز کے دفاتر بند کروا دئیے گئے ہیں،سکول آف ڈینٹسٹری، نرسنگ کالج سمیت ایڈمنسٹریشن کے تمام دفاتر کو تالے لگا دئیے گئے۔مظاہرین کی جانب سے ای ڈی آفس کا گھیراؤ کیا گیا ۔مظاہرین کی جانب سے حکومت کے خلاف شدید نعرے بازی کی گئی اور کہا کہ حکومت نے ایک طرف ہم سے مذاکرات کی بات کی اور دوسری طرف تیزی سے ایم ٹی آئی پر کام جاری ہے،آج ہسپتال ڈائریکٹر کا اخبار میں اشتہار دیا گیا ہے،ڈاکٹر ہمایوں اپنے پرائیویٹ کلینک میٹنگز کر رہے ہیں اور لوگوں کو نوکریوں کا جھانسہ دے کر خریدنے کی کوشش کر رہے ہیں۔ پاکستان ہیلتھ الائنس کے چیئرمین ڈاکٹر اسفند یار  نے کہا کہ پیر کے دن تمام کلینکل سروسز بھی بند کر دیں گے،بدھ کے روز احتجاج کے لیے بنی گالہ جائیں گے۔ 
ایم ٹی آئی

مزید :

صفحہ اول -