تمام سرکاری دفاترکو مکمل طور پر ڈیجیٹل لائز ڈکردیا گیا: ضیاء اللہ بنگش 

تمام سرکاری دفاترکو مکمل طور پر ڈیجیٹل لائز ڈکردیا گیا: ضیاء اللہ بنگش 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


پشاور(سٹاف رپورٹر) وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا کے مشیر برائے سائنس وانفارمیشن ٹیکنالوجی ضیاء اللہ بنگش نے کہاہے کہ وزیراعلی محمودخان کی ہدایت پر محکمہ سانئس وانفارمیشن ٹیکنالوجی کے تمام دفاتر اورسیکرٹری آفس کو پیپرلیس اورمکمل طور پر ڈیجیٹلائزڈ کردیاگیاہے اور محکمہ سائنس وانفارمیشن ٹیکنالوجی صوبے کی واحد وزارت ہے جس کا مکمل ڈیٹا ویب سائٹ پرموجود ہے۔ انہوں نے کہا کہ دیگر تمام وزراتیں پپرلیس بننے اور محکمہ سانئس وانفارمیشن ٹیکنالوجی کی تکنیکی سہولیات سے استفادہ حاصل کرنے کیلئے جلد ازجلد منسٹری آف سانئس وانفارمیشن ٹیکنالوجی سے رابطہ کریں۔ ان کو تمام ترسہولیات فراہم کی جائیگی۔ ضیاء اللہ خان بنگش نے کہاکہ مختلف وزارتوں کے علاوہ اعلیٰ تعلیمی اداروں نے بھی پیپرلیس نظام متعارف کرنے کیلئے رابطہ کیاہے جن میں خیبرمیڈیکل یونیورسٹی، عبدالولی خان یونیورسٹی مردان،سوات یونیورسٹی اور باچاخان یونیورسٹی کی ڈییجٹلائزیشن پرکام جاری ہیں۔  ان خیالات کا اظہارانہوں نے محکمہ سائنس وانفارمیشن ٹیکنالوجی کے جائزہ اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کیا۔ سیکرٹری سانئس وانفارمیشن ٹیکنالوجی ہمایون خان، منیجنگ ڈائریکٹر خیبرپختونخواانفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ ڈاکٹرعلی محمود، ڈائریکٹر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی ڈاکٹرخالد خان اوردیگرحکام نے اجلاس میں شرکت کی۔ ضیاء اللہ خان بنگش نے کہاکہ اس سال کے جون تک تمام محکموں کوڈیجٹلائزڈ کرنے کی منصوبہ بندی کی گئی ہے تاکہ عوام کو بہترین سہولیات مل سکیں۔ انہوں نے کہاکہ اسی طرح ہم عوام کی آسانی کیلئے ڈیجیٹل پیمنٹ سسٹم شروع کررہے ہیں جس کے ذریعے تمام تر پیمنٹس بذریعہ ڈیجیٹل ایپ کی جائیں گی۔ جبکہ پشاورضلع میں ائیرکوالٹی کنٹرول مانیٹرنگ سسٹم کی کامیاب تنصیب کے بعد یہ سسٹم پورے صوبے کے تمام اضلاع کے ڈپٹی کمشنرزآفسز میں لگائے جائیں گے۔ انہوں نے کہاکہ محکمہ سائنس وانفارمیشن ٹیکنالوجی میں انقلابی اقدامات جاری ہیں اور ان منصوبوں کی تکمیل سے ڈیجیٹل خیبرپختونخوا کاخواب شرمندہ تعبیرہوگا۔ جائزہ اجلاس میں مشیربرائے سائنس وانفارمیشن ٹیکنالوجی کو بریفنگ دیتے ہوئے بتایاگیاکہ سائنس اینڈ ٹیکنالوجی میں 14 اے ڈی پی سکیم پرکام جاری ہے۔ انفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ کے ڈیجیٹل جابز پراجیکٹ میں سیٹس کی تعداد میں مزید اضافہ کیاگیاہے۔ 3000 خواتین کو ڈیجیٹل سکلز کی تربیت دی جارہی ہے جبکہ صوبے کے مختلف اضلاع میں سیٹز ن فیسلیٹیشن سنٹرز بھی قائم کئے جارہے ہیں اسی طرح ارلی ایج پروگرامنگ پراجیکٹ بھی جاری ہے۔ قبائیلی نوجوانوں کی تکنیکی مہارتوں میں اضافے کیلئے بھی منصوبہ بندی شروع کی جا چکی ہے۔  ضیاء اللہ بنگش نے کہاکہ محکمہ سائنس وانفارمیشن ٹیکنالوجی نے سال 2020 میں کئی اہم منصوبے مکمل کئے ہیں جبکہ اسی سال کئی دیگراہم منصوبے  بھی عوام کے بہترمفاد میں شروع کئے جائیں گے۔ #

مزید :

صفحہ اول -