بلوچستان میں زرعی شعبہ کی ترقی سے 500ملین ڈالرکا زرمبادلہ حاصل ہوسکتاہے

بلوچستان میں زرعی شعبہ کی ترقی سے 500ملین ڈالرکا زرمبادلہ حاصل ہوسکتاہے

  

اسلام آباد (اے پی پی) بلوچستان میں مختلف اقسام کے پھل اور سبزیاں پیدا کرنے کےلئے بہترین موسم دستیاب ہیں۔ زرعی شعبہ کی ترقی اور گوادرپورٹ تک بہتر رسائی کی سہولیات کی فراہمی سے 500ملین ڈالرکا زرمبادلہ کمایا جاسکتا ہے۔ ہارویسٹ ٹریڈنگ کے ڈائریکٹر پلاننگ اعظم اسحاق نے جمعرات کو” اے پی پی“ سے گفتگوکرتے ہوئے بتایا کہ ملک میں پھلوں اور سبزیوں کی پیداوار کے حوالے سے بلوچستان دوسرا بڑا صوبہ ہے جبکہ کھجور کی پیداوار کے حوالے سے بلوچستان سب سے بڑا صوبہ ہے۔ انہوں نے بتایا کہ صوبہ بلوچستان میں سالانہ ایک ملین ٹن پھل پیدا کئے جاتے ہیں جبکہ انگور، چیری اور بادام کی ملکی پیداوار کا 90فیصد، انار، آڑو اور لوکاٹ کی مجموعی پیداوار کا 60فیصد اور سیب کی قومی پیداوار کا 34 فیصد پیدا کیا جاتا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ بلوچستان میں سالانہ 4 لاکھ 3ہزار584 ٹن کھجور کی پیداوارحاصل کی جارہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ بلوچستانمیں ہارٹیکلچر کے شعبہ کی ترقی کے وسیع امکانات موجود ہیں اور روایتی طریقہ کاشت کی بجائے کاشتکاری کے جدید طریقوں اورنئی ٹیکنالوجی کے استعمال کو فروغ دے کر ملکی پیداوارمیں کئی گنا اضافہ کیا جاسکتا ہے۔ اعظم اسحاق نے کہا کہ زرعی شعبہ کےلئے آب پاشی کےلئے پانی کی دستیابی اور گوادر پورٹ تک رسائی کی سہولتوں میں اضافہ کرکے بلوچستان سے پھلوں اور سبزیوں کی برآمدات میں نمایاں اضافہ کیا جاسکتا ہے جس سے قیمتی زرمبادلہ کما کر بلوچستن کے عوام کے معیار زندگی میں اضافہ کے علاوہ ان کی آمدنی میں بھی اضافہ کو یقینی بنایا جاسکتا ہے۔

مزید :

کامرس -