ڈیوٹی کے بغیر سگریٹوں کی فروخت سے 10ارب روپے سے زائد کا نقصان

ڈیوٹی کے بغیر سگریٹوں کی فروخت سے 10ارب روپے سے زائد کا نقصان

اسلام آباد(اے پی پی)سمگلنگ اور ڈیوٹی کی ادائیگی کئے بغیر 15ارب سگریٹوں کی فروخت سے قومی خزانے کو 10ارب روپے سے زائد کا نقصان ہو رہا ہے ۔ مالی نقصان کے علاوہ سمگل کئے گئے سگریٹوں کے پیکٹوں پر حکومت کے قوانین کے مطابق اختیار وارننگ بھی درج نہیں ہوئی اور ان میں سے زیادہ تر پیکٹوں پر اردو میں سگریٹ نوشی سے بچاﺅ کی وارننگ بھی نہیں چھپی ہوتی ۔ ایک سروے کے دوران لوگوں نے اے پی پی کو بتایا کہ ایسے سگریٹوں کی فروخت پر پابندی عائد کرنے کی ضرورت ہے تاکہ قومی خزانہ کو بھاری نقصان سے بچایا جا سکے ۔ انہوں نے کہا کہ تمباکو نوشی کے قوانین پر سختی سے عمل درآمد کروایا جائے ۔ایک تاجر انور خان نے کہا کہ تمباکو نوشی کے فروغ کو روکنے کیلئے مخلصانہ کوششوں کی ضرورت ہے اس کے ساتھ ساتھ عوامی مقامات پر سگریٹ نوشی ، تمباکو کو مصنوعات کی ترویج کیلئے اشتہاری پالیسی پربھی سختی سے عمل در آمد کروایا جائے۔ اس حوالے سے جب متعلقہ حکام سے رابطہ کیا گیا تو انہوں نے کہا کہ فریم ورک کنونیشن آن ٹوبیکو کنٹرول (ایف سی ٹی سی) کے حوالے سے حکومت بھرپور اقدامات کر رہی ہے اور سگریٹ نوشی کی روک تھام اور سگریٹ نہ پینے والے افراد کی صحت کی بہتری کیلئے آرڈنینس کا اجراءبھی کیاگیا ہے جس کے تحت عوامی مقامات پر سگریٹ نوشی کی ممانعت ، تمباکو مصنوعات کی تشہیر پر پابندی اور کم عمر افراد کو سگریٹ فروخت کرنے پر پابندی ہے ۔ حکام نے کہا کہ پاکستان ایشیاءکا پانچواں اور دنیا بھر کا 26 واں ملک ہے جہاں پر سگریٹ کے پیکٹوں پر احتیاطی تدابیر اور سگریٹ نوشی کے خلاف وارننگ بڑی واضح طریقے سے پرنٹ کی جاتی ہے۔

مزید : کامرس