پنجاب اجناس کی بہتر پیداوار کیلئے 53 ارب کے ر یسرچ پراجیکٹ کا آغاز

پنجاب اجناس کی بہتر پیداوار کیلئے 53 ارب کے ر یسرچ پراجیکٹ کا آغاز

  

راولپنڈی(اے پی پی)صوبائی وزیر زراعت و آبپاشی ملک احمد علی اولکھ نے کہا ہے کہ کپاس ، گندم ، چاول اور دیگر اجناس کی بہتر پیداوار کے لئے 53 ارب روپے کے ریسرچ پراجیکٹ کا آغاز کر دیا گیا ہے ، پنجاب حکومت زراعت کے فروغ کے لئے 92 ارب روپے سے زائد خرچ کر رہی ہے، صوبہ بھر میں 9 ہزار نئے کھالے بنائیں گے ، پانی چوری میں ملوث افسرو ں اور اہلکاروں کو معاف نہیں کیا جائے گا -گذشتہ روز کھلی کچہری سے خطاب کرتے ہوئے صوبائی وزیر نے بتایا کہ صوبہ بھر میں پانی کی کمی کو پورا کرنے کے لئے 35 ارب روپے کی لاگت سے لینڈ لیزر لیولر، سپرنکلر اور ڈرپ اریگیشن پراجیکٹ شروع کئے جا رہے ہیں ، انہوں نے کہا کہ 23 ہزار کلومیٹر لمبی نہروں کا نظام دنیا میں منفرد سسٹم ہے مگر دریا میں پانی کی کمی نے فصلوں کو بری طرح متاثر کیا ہے۔ حکومت پنجاب پانی کی کمی کو پورا کرنے کے لئے 49 چھوٹے ڈیم بنا رہی ہے ۔انہوں نے بتایا کہ بی ٹی کاٹن کی 82 نئی اقسام دریافت کی جا چکی ہیں، پنجاب میں 20 ہزار کاشتکاروں کو 2 لاکھ روپے فی ٹریکٹر سبسڈی دی گئی جس پر 4 ارب روپے خرچ ہوئے ۔ انہوں نے بتایا کہ اب مزید 20 ہزار گرین ٹریکٹرسبسڈی پر فراہم کئے جائیں گے - ملک احمد علی نے بتایا کہ حکومت پنجاب سولر انرجی ٹیوب ویل پراجیکٹ کیلئے چین ، نیپال اور بھارت کی تحقیق سے استفادہ کی خواہاں ہے۔ انہوں نے کہا کہ دیہات میں بائیو گیس پراجیکٹ شروع ہو چکے ہیں ۔

مزید :

کامرس -