اسلام پورہ میں سیکیورٹی گارڈ قتل کر دیا ، 2 افراد کی نعیش براآمد

اسلام پورہ میں سیکیورٹی گارڈ قتل کر دیا ، 2 افراد کی نعیش براآمد

  

لاہور(سپیشل رپورٹر) اسلام پورہ کے علاقہ میں سکیورٹی گارڈ قتل، سول لائنز اور ہربنس پورہ کے علاقوں سے 2 نامعلوم افراد کی نعشیں برآمد ۔ تفصیلات کے مطابق اسلام پورہ کے علاقہ چوہان روڈ پر ڈیفنس کا رہائشی زاہد میو ہسپتال کے قریب میڈیکل سٹور کے مالک محمود کی حویلی پر بطور چوکیدار گزشتہ چھ ماہ سے کام کرتا تھا ،جمعہ اور ہفتہ کی درمیانی شب زاہد اور اس کے ساتھی گوگا نامی نوجوان حویلی کے قریب سوئے ہوئے تھے دو نامعلوم لڑکوں نے اس کو فائرنگ کرکے قتل کر دیا ، فرار ہو گئے عینی شاہد نے پولیس کو بتایا کہ ملزمان نے مقتول کو تسلی سے قتل کیا اس کی موت کا یقین ہونے پر فرار ہو گئے پولیس نے لاش قبضہ میں لیکر پوسٹ مارٹم کے لئے مردہ خانے جمع کرو ادی ہے ۔مقتول پانچ بہنوں اور تین بھائیوں میں تیسرے نمبر پر تھا پولیس نے مزید بتایا کہ مقتول زاہد کی بیوی چھ ماہ قبل اسکو چھوڑ کر اپنے آشنا کے ساتھ فرار ہو گئی ہے ۔حویلی کے مالک نے پولیس کو بتایا کہ مقتول زاہد میرے پاس چھ ماہ سے ملازم تھا اس کی کسی سے کوئی رنجش نہیں تھی معلوم نہیں کہ اس کو کس نے قتل کیا ہے تاہم اصل حقائق تفتیش اور پوسٹ مارٹم رپورٹ کے بعد ہی معلوم ہونگے ۔ل لائنز کے علاقہ لارنس روڈ پر نامعلوم شخص کو مردہ حالت میں دیکھ کر راہگیروں نے پولیس کو اطلاع دی پولیس نے موقع پر پہنچ کر لاش قبضہ میں لیکر شناخت کے لئے مقامی مساجد میں اعلانات کروائے ورثاءبارے علم نہ ہونے پر پولیس نے لاش ایدھی ایمبولینس کے ذریعے مردہ خانے جمع کروا دی ہے پولیس کا کہنا ہے کہ متوفی حلیے سے نشی معلوم ہوتا تھا اس کی موت نشے کی زیادتی کے باعث ہوئی ہے جبکہ شبہ ظاہر کیا جا رہا ہے کہ نوسربازوں نے نامعلوم شخص کو نشہ آور شے کھلا کر ہلاک کیا ہے اصل حقائق پوسٹ مارٹم رپورٹ کے بعد ہی معلوم ہونگے۔ہر بنس پورہ کے علاقہ لال پل کے قریب نہر میں نامعلوم شخص کی تیرتی ہوئی لاش دیکھ کر نہر کنارے بیٹھے مقامی افراد نے خوف زدہ ہو کر پولیس کو اطلاع دی جبکہ لاش نہر میں دیکھ کر لوگوں کی بڑی تعداد موقع پر جمع ہو گئی پولیس نے موقع پرپہنچ کر لاش نہر سے نکال کر شناخت کے لئے مقامی مساجد میں اعلانات کروائے مگر ورثاءبارے علم نہ ہونے پر پولیس نے لاش قبضہ میں لیکر ایدھی ایمبولینس کے ذریعے مردہ خانے جمع کر وا دی ہے ۔پولیس کا کہنا ہے کہ متوفی شکل و صورت سے کسی اچھے گھر کا معلوم ہوتا ہے بظاہر اس کے جسم پر کوئی تشدد کے نشانات موجود نہیں ہےں ہو سکتا ہے نہر میں نہاتے ہوئے ڈو ب کر ہلاک ہو گیا ہو تاہم شبہ ظاہر کیا جا رہا ہے کہ نامعلوم شخص کو نامعلوم ملزمان نے گلا دبا کر قتل کرکے لاش نہر میں پھینک دی ہے اصل حقائق شناخت اور پوسٹ مارٹم رپورٹ کے بعد ہی معلوم ہو نگے ۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -