رمضان المبارک میں کم سے کم لوڈشیڈنگ کی جائے گی، احمد مختار

رمضان المبارک میں کم سے کم لوڈشیڈنگ کی جائے گی، احمد مختار

لاہور(کامرس رپورٹر) وفاقی وزیر پانی و بجلی چوہدری احمد مختار نے کہا ہے کہ شہباز شریف سے خاندانی مراسم ہیں لوڈ شیڈنگ کے معاملے پر ان سے مذاکرات کیلئے ہر وقت تیار ہوں‘ لوڈ شیڈنگ کے معاملے پر پنجاب کے ساتھ ناانصافی میں کوئی حقیقت نہیں‘ رمضان المبارک میں کم سے کم لوڈ شیڈنگ کیلئے کوشش کی جائیگی‘ بجلی بحران کے حل کیلئے صوبوں کو بقایا جات دینے چاہئیں‘ پرائیویٹ سیکٹر نے 166 ارب ادا کرنے ہیں‘ بجلی بحران کے مستقل حل کیلئے چین سمیت کئی ممالک کے ساتھ مختلف منصوبوں پر بات ہو رہی ہے‘ لوڈ شیڈنگ کے خاتمے کا کوئی حتمی ٹائم فریم نہیں دے سکتا لیکن لوڈ شیڈنگ میں بتدریج کمی ہو رہی ہے۔ وہ ہفتہ کے روز لاہور ایئر پورٹ پر میڈیا سے گفتگو کر رہے تھے۔ وفاقی وزیر پانی و بجلی چوہدری احمد مختار نے کہا کہ ہم صوبوں سے بقایا جات سے ریکوری کی کوشش کر رہے ہیں اور ان مشکل حالات میں صوبوں کو چاہئے کہ وہ نہ صرف اپنے بقایا جات دیں بلکہ بجلی کے بحران کے حل کیلئے وفاقی حکومت کے شانہ بشانہ چلے۔ انہوں نے کہا کہ لوڈ شیڈنگ کے معاملے پر پنجاب کے ساتھ انصافی کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا اور اگر شہباز شریف کو اس حوالے سے کوئی تحفظات ہیں تو میں ان کے تحفظ دور کرنے کیلئے ان سے ہر وقت ملاقات کو تیار ہوں‘ صوبوں اور وفاق میں دوری کی وجہ سے غلط فہمیاں پیدا ہوتی ہیں جو نہیں ہونی چاہئیں۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ حکومت بجلی بحران کے حل کیلئے سنجیدہ اقدامات کر رہی ہے اور ہم نے اعلان کیا تھا کہ شب برات پر لوڈ شیڈنگ نہیں ہو گی اور وعدے کے مطابق لوڈ شیڈنگ نہیں ہوئی۔ انہوں نے کہا کہ بجلی کے بحران کے مستقل حل کیلئے چین ایران سمیت کئی ممالک سے مختلف منصوبوں کیلئے بات چیت ہو رہی ہے اور آنیوالے دنوں میں یقینا ملک میں بجلی کا بحران کم ہو گا تاہم لوڈ شیڈنگ کے خاتمہ کے حوالے سے کوئی حتمی ٹائم فریم نہیں دے سکتا۔ انہوں نے کہا کہ رمضان المبارک میں کم سے کم لوڈ شیڈنگ کی کوشش کی جائے گی اور سحری اور افطاری کے دوران لوڈ شیڈنگ نہیں کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ آج ضرورت اس بات کی ہے کہ صوبے وفاق کا ساتھ دیں۔

مزید : صفحہ اول