مغرب ملی مسلم لیگ کو اپنے لئے خطرہ سمجھتا ہے،حافظ سعید

مغرب ملی مسلم لیگ کو اپنے لئے خطرہ سمجھتا ہے،حافظ سعید

قصور(بیورورپورٹ) عالمی میڈیا ملی مسلم لیگ کے سیاست میں آنے کی وجہ سے چیخ رہا ہے، حافظ سعید،ہم ملک دشمن عناصر کی سازشیں ناکام بنانے کیلئے سیاست کے میدان میں آئے ہیں، سیف اللہ خالد، 2018کے الیکشن میں ملی مسلم لیگ نہ ہو تو اس الیکشن میں کوئی جان نہیں، امریکی حکم پر سیاست کے فرعونوں نے ہم پر پابندیاں لگائی،عبدالرحمان مکی، حافظ سعید کو دس ماہ نظر بند کرنے والوں کو دس سال کی سزا ہوئی، مقررین۔تفصیلات کے مطابق ملی مسلم لیگ قصور کی طرف قصور میں ورکرکنونشن کا اہتمام کیا گیا جس میں جماعت الدعوۃ کے امیر پروفیسر حافظ محمد سعید نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ عالمی میڈیا ملی مسلم لیگ کے سیاست میں آنے کی وجہ سے چیخ رہا ہے، وہ انہیں اپنے لئے خطرہ سمجھتے ہیں، جو پاکستان مودی کیلئے خطرہ نہیں ہے اسے الیکشن ہی نہیں لڑنا چاہئے،آج 1970جیسے حالات پیدا کرکے شیخ مجید الرحمان جیسے غداروں کی تلاش کی جا رہی ہے، آئندہ ہونے والی سازشیں ناکام بنانے کیلئے ہمارے کارکنان میدان سیاست میں آئے ہیں، ہم نے اس معرکے کو ایک تحریک بنانا ہے اورپاکستان کو بچانے اور اس کی حفاظت کو اپنا مشن بناکر چلنا ہے، ہمارے کارکنان گھر گھر جاکر ملکی کو بد امنی مفاد پرستی کی سیاست سے نجات دلانے اور کلمہ کی سربلندی کیلئے اپنا کردار ادا کرنا ہو گا،ہم خدمت کی سیاست کرکے عوام کی دل جیتیں گے اورہم پاکستان کو امن کا گہوارہ بنائیں گے، کارکنان قصور میں پھیل جائیں اور گھر گھر جاکر ملی مسلم لیگ تحریک اللہ اکبر کیلئے ووٹ مانگیں، قصور کی تحریک پورے پاکستان کیلئے مثال بنے گی۔ سیف اللہ خالد نے کہا کہ جب ہم شعور کو پہنچے تو پتا چلا کہ 70کے الیکشن میں تین کردار متحرک تھے جن میں ہندوستان کی بد بخت اندرا گاندھی تھی مشرقی پاکستان کا بد قسمت مجید الرحمان تھا مغربی پاکستان کا حرس طمع اور لالچ سے لبریز ذوالفقار علی بھٹو تھا ۔ ان تین کرداروں کی وجہ سے پاکستان دو لخت ہو گیا، آج 2018کے الیکشن میں ان تین کرداروں کے مقابلے میں آج کوئی را کے ساتھ ملوث کوئی کابل کے ساتھ جو پاکستان کو کمزور کرنا چاہتے ہیں، ان کے مقابلے میں ہم آئے ہیں،ہمارے امیدوار وں کا کردار آپ کے سامنے ہے۔پروفیسر عبدالرحمان مکی نے کہا کہ وڈے ڈاکو پانامہ کے چور نے جو کھیل رچایا تھا نا کہ فوج کے خلاف ، ملک کے اندر اداروں کے خلاف، دینی جماعتوں کے خلاف بیانات دینا وہ یہ بیانات دیکر کس کی ترجمانی کر رہے تھے،ان کا جرم پانامہ وغیرہ نہیں بلکہ اصل جرم پاکستان کی دشمنی ہے،اس ملک کو ٹکڑے ٹکڑے کرنے کی سازش ہے،یہ جو دولت ثابت نہیں ہو رہی وہ ملکی دشمنی پر بھارت سے ملنے والی رشوت ہے،جو پاکستان کو کنگال کرنے کیلئے انہیں دی گئی، پانچ دریا سوکھ گئے، زراعت تباہ ہو گئی، لیکن مجال ہے آج تک کوئی ایک بیان دریاؤں پر دیا ہو۔ہم نجاست اور دلالی سے پاک سیاست کرنے کیلئے میدان میں آئے ہیں،سیاست کا فرعون اپنے انجام کو پہنچ چکا ہے، 2018کے الیکشن میں ملی مسلم لیگ نہ ہو تو اس الیکشن میں کوئی جان نہیں۔ ضلعی رہنما عبدالغفار منصور، عبدالحمید بھٹہ، ندیم ایڈووکیٹ، عبدالرحمان داخل،این اے 137کے ٹکٹ ہولڈر حافظ مسعود انور، پی پی 175کے ٹکٹ ہولڈر حافظ فیصل انصاری نے کہا کہ پروفیسر حافظ محمد سعید کو دس ماہ نظر بند رکھنے والوں کو آج دس سال کی سزا ہو چکی ہے، ملی مسلم لیگ کا مقابلہ پاکستانی سیاست دانوں سے نہیں بلکہ عالم کفر سے ہے۔

مزید : صفحہ آخر