راجہ ظفر الحق رپورٹ کو سانے لایا جائے ، پہلی بار طاقتور قانون کی پکڑ میں آیا : عمران خان

راجہ ظفر الحق رپورٹ کو سانے لایا جائے ، پہلی بار طاقتور قانون کی پکڑ میں آیا : ...

اسلام آباد،کوہاٹ(سٹاف رپورٹر،بیورورپورٹ ) چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کا کہنا ہے احتساب عدالت نے ایک طاقتور کو سزا سنائی اور پاکستان کی تاریخ میں پہلی مرتبہ کسی طاقتور کو سزا ملی۔اسلام آباد گولڑہ شریف میں علما مشائخ کانفرنس ،کوہاٹ میں انتخابی جلسہ عام سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان نے کہا پاکستان کو دلدل سے نکالنے کیلئے قانون کی بالادستی لانا ، اسلامی اصول اپنانا ہونگے ، اس کا مطلب کمزور اور طاقتور سب برابر ہیں، (ن) لیگ کے لوگوں سے کہنا چاہتا ہوں کیا آپ نے اللہ کو جواب نہیں دینا؟ سب کو پتا تھا جھوٹ پر جھوٹ بولا جارہا ہے۔نوازشریف کو اللہ نے جتنے موقعے دیئے شاید کسی اور کو ملے ہوں، انکا کہنا تھا بچوں کے نام پر دنیا کے مہنگے ترین فلیٹس خریدے گئے اور پاکستان میں ڈھائی کروڑ بچے سکولوں سے باہر ہیں، یہ کسی ملک کا زوال ہے اس کی اخلاقیات ختم ہوجا ئیں، اچھے اور برے کی تمیز ختم ہونے سے قومیں تباہ ہوجاتی ہیں۔عمران خان نے ختم نبوت کے حلف نامے میں تبدیلی سے متعلق راجہ ظفر الحق کی رپورٹ منظر عام پر لانے، جنہوں نے سازش کی انہیں بے نقاب کرنے کا مطالبہ بھی کیا۔ انسان فنا ہونیوالی چیز ہے، ہم نے اپنی زندگی میں بہت سے لوگوں کو جاتے ہوئے دیکھا، میں وہ آدمی ہوں جس نے زندگی میں بہت ماریں کھائی ہیں، اکیس سال گراؤنڈ میں گزا ر ے، آج پاکستان کا قرضہ 6ہزار ارب سے 27ہزار ارب ، ڈالر 125روپے ہو گیا ہے، روپے کی قیمت گر چکی ہے۔ لیڈر وہ ہوتا ہے جو عوام پر پیسہ خرچ کرتا ہے، نواز شریف کے فیصلے میں سب سچ سامنے آ گیا ہے، آج پاکستان کو بہترین صحت کے نظام کی ضرورت ہے، نواز شریف کے صاحبزادے کہتے ہیں ہم پاکستا ن کے شہری نہیں ،بڑے بڑے اولیاء کرام انسانیت کی خدمت کرتے تھے، آج ملک تقسیم ہوا ہے ہمیں اسے اکٹھا کرنا ہے، قوم اکٹھی ہو جائے، ہم گرنے سے بچ جائیں گے، ہم اس بحران سے نکل سکتے ہیں، پیر جامی صاحب نے ہماری حمایت کا اعلان کر دیا ہے، پاکستان میں اڑھائی کروڑ بچے سکول نہیں جانتے ہیں، کرپشن نے ملک کو کھوکھلا کر دیا ہے جو ختم نبوت پر یقین نہیں رکھتا وہ خود کو مسلمان نہیں کہہ سکتا۔ عمران خان نے کہا مولانا فضل الرحمان کیلئے اقتدار سے باہر رہنا ایسا ہی ہے جیسے پانی سے باہر مچھلی،پاکستان کا سب سے بڑا مسئلہ بیروزگاری ہے، دوسرا مسئلہ ہر دوسرے دن مہنگائی کا بڑھنا ہے، جیسے جیسے مہنگائی ہوتی ہے، غربت بڑھ جاتی ہے پاکستان میں جو خوبصورتی ہے وہ سوئٹزرلینڈ میں بھی نہیں، اگر صحیح طرح اس زمین کو استعمال کریں تو دنیا کو اناج بھیج سکتے ہیں ۔ عمر ا ن خان نے ایک بار پھر مسلم لیگ ن کے صدر اور سابق وزیراعلیٰ پنجاب پر تنقید کرتے ہوئے کہا شہباز شریف نے کہا میں لاہور کو پیرس بناد و ں گا لیکن جب بارش ہوئی تو پیرس دھل گیا اور نیچے سے لاہور نکلا۔عمران خان نے کہا یہ سمجھنا ضروری ہے کہ ایک قوم خوشحال کیسے ہوتی ہے اور تباہ کیسے ہوتی ہے۔ہمیں اللہ نے پاکستان میں ذرخیز زمین دی، کوئلہ، سونا، تانبا، گیس اور مختلف معدنیات یہاں ہیں، ہم ہر چیز پاکستان میں اْگا سکتے ہیں لیکن ان سارے وسائل کے باوجود ملک کی آدھی آبادی غربت کی لکیر کے قریب ہے۔ گندا پانی پینے کی وجہ سے ہر سال ڈیڑھ سے 2 لاکھ بچے مرتے ہیں۔ سوئٹزرلینڈ میں کوئی چور پر پکڑا جائے تو اسے 40 گاڑیوں کا پروٹوکول نہیں ملتا، سوئٹزرلینڈ کے سرکاری سکولوں کے بچے وزیراعظم بن سکتے ہیں۔10 سال میں دونوں پارٹیوں نے ملک کو لوٹا،اقتدار ملا کوسب سے پہلے کرپشن ختم ، ملکی ادارے مضبوط کروں گا۔ پاکستان کوسوئٹرزلینڈ تو نہیں بناؤں گا البتہ ادارے سوئٹرزلینڈ جیسے ضرور بناؤں گا، جب ادارے غیرسیاسی ہوتے ہیں تو قوم ترقی کرتی ہے، ہماری حکومت آئی تو گورنر ہاؤسزعوام کیلئے ہوں گے۔ایک سال میں 8 ہزارارب ٹیکس اکٹھا کرکے دکھاؤں گا،یہ کوئی مشکل کام نہیں ، 8 ہزار ارب روپے ٹیکس اکٹھا کیا تو قرضوں کی ضرورت نہیں پڑے گی۔

عمران خان

لاہور(ایجوکیشن رپورٹر)پیر آف گولڑہ شریف نے آئندہ عام انتخابات 2018میں تحریک انصاف کی مکمل حمایت کا اعلا ن کردیا، اس بات کا اعلان چیئرمین تحریک انصاف عمران خان اورپیرآف گولڑہ شریف نظام الدین جامی کے درمیان ملاقات میں کیا گیا۔تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے پیر آف گولڑہ شریف نظام الدین جامی سے ملاقات کی، ملاقات میں ختم نبوت کے حوالے سے تفصیلی گفتگو ہوئی جس میں عمران خان نے پیر آف گولڑہ شریف اور وہاں پر موجود دیگر علماء سے وعدہ کیا وہ کامیاب ہو کر پاکستان میں ختم نبوت کے نفاذ کے حوا لے سے اپنا بھر پور کردار ادا کریں گے اس موقع پر پیر سید منور حسین جماعتی کی جانب سے لندن سے بھیجے گئے چار مطالبات کو من و عن تسلیم کر لیا گیا ۔یہ مطالبات سجادہ نشین درگاہ پیر بھرت چونڈی،میاں عبدالخالق نے پیش کئے ان میں پاکستان کو اسلامی فلاحی مملکت بنانے کیلئے موثر اقدامات ،مملکت خداداد پاکستان کے اسلامی تشخص کو برقرار، سیکولر سٹیٹ بنانے کی کسی کارروائی یا تحریک کی حمایت و معاونت نہیں مخالفت کی جائے گی ،آئین پاکستان کے آرٹیکل (2) جس کے تحت اسلام ریاست کا سرکاری مذہب ہے، آرٹیکل 3جس میں اسلامی طرز زندگی کو فروغ دینے کا کہا گیا ہے آرٹیکل 62اور 63جس کے تحت الیکشن میں امیدواروں کی اہلیت اور نا اہلیت کا معیار مقرر کیا گیا ہے ۔آرٹیکل 227جس میں قرار دیا گیا ہے موجودہ قوانین کو اسلامی سانچے میں ڈھالا جائے گا اور کوئی قانون قرآن و سنت کے منافی نہیں بنایا جائے گا ۔آرٹیکل 260.3B جس میں غیر مسلم کی تعریف دے کر قادیانی گروپ اور لاہوری گروپ جو اپنے آپ کو احمدی کہلاتے ہیں انہیں غیر مسلم قرار دیا گیا ہے ۔کو نہ صرف کسی بھی صورت آئین سے حزف کیا جائے گا نہ ان میں کوئی ترمیم کی جائے گی بلکہ ان آرٹیکلز کا تحفظ کیا جائیگا اور ان کیخلاف کسی کسی بھی تحریک کی مخالفت اور مزاحمت کی جائے گی ،یہ کہ تعزیرات پاکستان کی دفعہ 295.Cجو کہ توہین رسالت کے مجرم کی سزائے موت سے متعلق ہے اور دیگر دفعات اور قوانین جو کہ امتناع قادیانیت کے زمرے میں آتے ہیں کو نہ صرف برقرار رکھا جائے گا بلکہ کسی بھی صورت مذکورہ قوانین کو قانون سازی کے ذریعے یا انتظامی طور پر کسی بھی تحریک کی مخالفت اور مزاحمت کی جائے گی،اس موقع پر پیرآف گولڑہ شریف نے چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان کویقین دلایا ملک میں تحریک انصاف کے امیدواروں کی بھرپور حمایت کی جائے گی ۔چیئرمین عمران خان سے میڈیا نمائندوں نے ایک سوال ’’ کیا نوازشریف واپس آئیں گے؟‘‘کے جواب میں کہا اس کا جواب تو نو ا ز شر یف ہی دے سکتے ہیں۔

مزید : صفحہ اول