ایم ایم اے جید علماء کی مذہبی وسیاسی جماعت ہے :علامہ صدیق

ایم ایم اے جید علماء کی مذہبی وسیاسی جماعت ہے :علامہ صدیق

بریکوٹ (نمائندہ پاکستان )ایم ایم اے ملک کے سطح پر جید پانچ جماعتی علماء کرام پر مشتمل دینی سیاسی جماعت ہے۔ علماء کرام دین کے ساتھ ساتھ دنیاوی امور پر بھی خصوصی عبور اور مہارت رکھتے ہیں ۔ ختم نبوت کے مسلے پر قائد جمعیت مولانا فضل الر حمن نے آواز اٹھائی ، ایم ایم اے نے دور اقتدار میں ریکارڈ تر قیاتی کام کر چکے ہیں ، جس کی مثال 70 میں نہیں ملتی ۔ ان خیالات کا اظہار ایم ایم اے کے صوبائی رہنما مولانا علامہ صدیق ، ضلعی جنرل سیکرٹری اسحا ق ذاہد ، حلقہ پی کے 6 کے امیدوار حاجی شاہی نواب باچا، سابق ایم پی اے مولانا نظام الدین ۔ مفتی گوہر علی ، عزیزالرحمن خان، مولانا حافظ ادریس ۔ مولانا شیر محمد ، مولانا خلفتہ اللہ۔ سید علی باچا و دیگر نے بریکوٹ میں علماء اور ورکرز کنونشن سے خطاب کرتے ہو ئے کیا ۔ انہوں نے کہا کہ سابق حکومتوں صوبے میں ایک میگا پر اجیکٹ شروع نہیں کیا، بلکہ الٹا عوام کو مایو سی کے سوا کچھ نہیں دیا۔ سوات میں ضلعی سطح پر گر یڈA ہسپتال۔ کیڈٹ کالج ، وغیرہ ایم ایم اے حکومت کے کارنامے ہیں ، سابق حکومت نے فاٹا انظمام کے نام پر عوام کو دھوکہ دیکر ملاکنڈ ڈدویثرن کے خصوصی حیثیت ختم کردیا ۔ اج عوام اس خلاف شٹرڈوان ہڑتالوں پر مجبور ہیں۔ مولانا فضل الر حمن نے اس کے مخالفت کی مگر اکثریت کے کے فیصلے کو فوقیت دیکر فاٹا انظمام کے ساتھ ساتھ ملاکنڈ ڈویثرن کا خصوصی حیثیت ختم کردیا جو عوام کے ساتھ انتہا ئی زیادتی ہے۔انہوں نے کہا کہ علماء کرام اسمبلیوں میں اسلام کے خلاف تما م عوامل کا ڈٹ کر جوان مر دی کے ساتھ مقابلہ کر رہی ہے انہوں نے کہا کہ ایم ایم اے ملک میں نظام مصطفی کے نفاذ کیلئے میدان نکلے ہیں ، عوام25 جولائی کتاب کے نشان پر مہر لگا کر اسلام دوستی کا ثبوت دیں ، انہوں نے کارکنوں پر زور دیا کہ ایم ایم اے کے امیدوار حلقہ پی کے 6 حاجی شاہی نواب باچا کیلئے ڈور ٹو ڈور مہم چلا ئیں ، اور ایم ایم اے کا پیغام گھر گھر پہنچائیں ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر