بھرپور جنسی صحت کیلئے روزانہ کتنی دیر دھوپ میں بیٹھنا چاہیے؟ سائنسدانوں نے انتہائی حیران کن انکشاف کر دیا

بھرپور جنسی صحت کیلئے روزانہ کتنی دیر دھوپ میں بیٹھنا چاہیے؟ سائنسدانوں نے ...
بھرپور جنسی صحت کیلئے روزانہ کتنی دیر دھوپ میں بیٹھنا چاہیے؟ سائنسدانوں نے انتہائی حیران کن انکشاف کر دیا

  

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) سورج کی روشنی سے ہمیں وٹامن ڈی حاصل ہوتا ہے، جس کے بے شمار طبی فوائد سے ہم آگاہ ہیں لیکن اب سائنسدانوں نے اس کے ایک ایسے فائدے کا انکشاف کر دیا ہے کہ جان کر رنگت کالی ہونے کے خوف سے سورج سے بچنے والے مردوخواتین بھی دھوپ میں پھرتے نظر آیا کریں گے۔ میل آن لائن کے مطابق جو مردوخواتین جنسی کمزوری کا شکار ہو چکے ہیں ان کے لیے سورج کی روشنی انتہائی مفید چیز ہے کیونکہ اس سے حاصل ہونے والا وٹامن ڈی مردوخواتین میں جنسی ہارمونز بالترتیب ٹیسٹاسٹرون اور ایسٹروجن کی پیداوار کا سبب بنتا ہے اور ان کی جنسی کمزور رفع ہو جاتی ہے۔ تحقیقاتی نتائج میں ثابت ہوا ہے کہ جو مردوخواتین روزانہ صرف 30منٹ سورج کی روشنی میں گزارتے ہیں، محض دو ہفتے میں ہی ان کی جنسی قوت بحال ہو جاتی ہے۔

برطانیہ کے ’دی ویمنز ہیلتھ کلینک‘ کے جنسی صحت کی ماہر ڈاکٹر ایلے ڈیلکس کا کہنا تھا کہ ’’وٹامن ڈی ہماری صحت مندی کے لیے ازحد ضروری ہے، خاص طور پر ہماری جنسی صحت کے لیے، اور سورج اس کے حصول کا سب سے بڑا ذریعہ ہے۔وٹامن ڈی مردوخواتین میں محض جنسی ہارمونز ہی پیدا نہیں کرتا بلکہ ان کے جنسی اعضاء سے منسلک پٹھوں کو بھی مضبوط بناتا اور ان کی جنسی کارکردگی کو بڑھاتا ہے۔یہی وجہ ہے کہ وٹامن ڈی کو ’سیکس وٹامن‘ بھی کہا جاتا ہے۔ جو مرد یا خواتین جنسی کمزوری کا شکار ہو کر شریک حیات میں رغبت کھو چکے ہیں انہیں چاہیے کہ روزانہ 30منٹ تک دھوپ میں رہنا شروع کر دیں۔ اس سے محض دو ہفتے میں ہی ان کی کھوئی ہوئی جنسی توانائی واپس آ جائے گی۔ یہ کام وٹامن ڈی کے سپلیمنٹ لے کر بھی کیا جا سکتا ہے تاہم سورج کی روشنی پھر بھی اس سلسلے میں سب سے اہم چیز ہے۔‘‘

مزید : ڈیلی بائیٹس