’’مجھے انڈسٹری میں اتنے لوگوں نے جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا کہ۔۔۔‘‘ معروف گلوکارہ نے انتہائی دلخراش انکشاف کر دیا

’’مجھے انڈسٹری میں اتنے لوگوں نے جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا کہ۔۔۔‘‘ معروف ...
’’مجھے انڈسٹری میں اتنے لوگوں نے جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا کہ۔۔۔‘‘ معروف گلوکارہ نے انتہائی دلخراش انکشاف کر دیا

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک)ہالی ووڈ کے معروف پروڈیوسر ہاروے ونسٹن پر درجنوں خواتین کی طرف سے جنسی ہراسگی کے الزامات عائد کرنے کے بعد دنیا بھر سے ایسی خواتین کے سامنے آنے کا سلسلہ جاری ہے جو جنسی استحصال کا نشانہ بن چکی ہیں۔ اب معروف امریکی گلوکارہ سنیٹا(Sinitta)بھی اس فہرست میں شامل ہو گئی ہیں اور ایسی بات کہہ دی ہے کہ سن کر شیطان بھی شرم سے پانی پانی ہو جائے۔میل آن لائن کے مطابق گلوکارہ سنیٹا نے بتایا ہے کہ میوزک انڈسٹری میں آنے کے بعد اب تک 6سینئرزاسے جنسی زیادتی کا نشانہ بنا چکے ہیں۔انڈسٹری میں جب میں نے قدم رکھا اور جس پہلے پروڈیوسر سے ملی اس نے ہی میرا جنسی استحصال کر ڈالا اور اس کے بعد 5مزید مردوں کے ہاتھوں ہراساں ہونے کے بعد میں یہاں تک پہنچی ہوں۔ میرے ساتھ یہ معاملہ میوزک انڈسٹری میں آنے کے بعد ہی نہیں ہوا۔ یہ سلسلہ اس وقت شروع ہو گیا تھا جب میری عمر صرف 4سال تھی۔ اتنی کم عمر میں مجھ پر جنسی حملہ کسی مرد نے نہیں بلکہ ایک عورت نے کیا تھا جو ہماری ’فیملی فرینڈ‘ تھی اور میں اسے آنٹی کہتی تھی۔‘‘

سنیٹا نے مزید بتایا کہ ’’اس آنٹی نے میرے ساتھ جو کچھ کیا، آج بھی اس کا خیال میرے لیے بہت تکلیف دہ ہے۔ میں جب کچھ بڑی ہوئی تو مجھے برطانیہ کے ایک بورڈنگ سکول میں بھیج دیا گیا اوروہاں میرے جنسی استحصال کا نیا دور شروع ہوا۔ وہاں طالبات کے ایک گینگ نے مجھے کئی بار جنسی تشدد کا نشانہ بنایا۔ وہ کہتی تھیں کہ انہیں میری سیاہ رنگت بہت اچھی لگتی ہے۔میں اس تجربے سے گزر چکی ہوں اور یقین سے کہہ سکتی ہوں کہ جو کچھ آپ کے ساتھ بچپن میں ہوتا ہے وہ تمام عمر آپ کا پیچھا نہیں چھوڑتا۔ میں بچپن سے اب تک ہونے والے جنسی استحصال کے ان گنت واقعات پر اب تک خاموش رہی، مجھے ’می ٹو‘ مہم نے حوصلہ دیا اور میں اس پر بولنے کے قابل ہوئی۔‘‘

مزید : ڈیلی بائیٹس