مارکیٹوں میں نکاسی آب کا نظام بہتر کیا جائے: حاجی محمد حنیف

مارکیٹوں میں نکاسی آب کا نظام بہتر کیا جائے: حاجی محمد حنیف

  

لاہور(لیڈی رپورٹر) شہر کی تمام مارکیٹوں میں نکاسی آب کا نظام فوری طور پر بہتر کیا جائے تاکہ مون سون کے دوران تاجر برادری کو نقصانات سے محفوظ رکھا جاسکے۔ ان خیالات کا اظہار صدر شاہ عالم مارکیٹس بورڈ حاجی محمد حنیف نے تاجروں کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ جلاس میں نعیم حنیف، چوہدری مقصود احمد جنرل سیکرٹری، چوہدری سجاد، محمد فیاض، سیٹھ فرحان شفیق،توصیف نثار، فرحان علی چوہدری، شاہدنذیر، عارف محمود،شفیق پپو و دیگر نے شرکت کی۔حاجی محمد حنیف نے کہا کہ ہر سال مون سون کے سیزن میں صنعتکاروں اور تاجروں کو بھاری نقصان برداشت کرنا پڑتا ہے کیونکہ بارش کا پانی انڈسٹریل یونٹس، گوداموں، دکانوں اور دفاتر میں داخل ہوکر بْری طرح تباہی مچاتا اور تیار مصنوعات، خام مال، مشینری اور فرنیچر کو خراب کرکے اربوں روپے کے نقصان کا سبب بنتا ہے۔اجلاس میں یہ فیصلہ بھی کیا گیا کہپیٹرولیم مصنوعات میں اضافے کو مسترد کرتے ہوئے کہا ہے ک حکومت اس فیصلے کو فوری واپس لے کیونکہ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے سے زرعی شعبے کی پیداواری لاگت میں اضافہ ہوجائے گا اور تھرمل پاور جنریشن کی لاگت بھی بڑھ جائے گی جس سے صنعتی شعبے کو بہت نقصان ہوگا۔اانہوں نے کہا کہ سرکاری کمپنیاں خزانے پر بوجھ ہیں جنکی کرپشن اور کام چوری کے نقصانات کے ازالے کیلئے قوم کو سالانہ کئی کھرب روپے کا بوجھ اٹھانا پڑتا ہے۔ورلڈ بینک نے اپنی حالیہ رپورٹ میں انکشاف کیا ہے کہ بجلی کے شعبے نے گزشتہ دس سال میں 45ارب ڈالر ہڑپ کر لئے ہیں جبکہ پاکستان میں بجلی کے پیداواری اخراجات پڑوسی ممالک سے 25فیصد زیادہ ہیں جسکی وجہ بجلی کی خریداری کے ناقص معاہدے ہیں۔ یہ رپورٹ بنانے میں انتہائی احتیاط سے کام لیا گیا ہے کیونکہ حقیقت تو یہ ہے کہ اس شعبے نے دوگنے سے زیادہ نقصان کیا ہے اور وزراء کے بلند وبانگ دعووں کے باوجود یہ سلسلہ ماضی کے مقابلے میں انتہائی تیزی سے بڑھ رہا ہے۔تیل کی قیمتوں میں زبردست کمی کے باوجود اس وقت گردشی قرضہ ملکی تاریخ میں بلند ترین سطح 2.2 کھرب روپے تک پہنچ کر ملکی معیشت کی بنیادیں کھودنے میں مصروف ہے۔

مزید :

کامرس -