امریکہ عالمی ادارہ صحت سے دستبردار،اقوام متحدہ اورکانگریس کونوٹس دےدیا

امریکہ عالمی ادارہ صحت سے دستبردار،اقوام متحدہ اورکانگریس کونوٹس دےدیا
امریکہ عالمی ادارہ صحت سے دستبردار،اقوام متحدہ اورکانگریس کونوٹس دےدیا

  

واشنگٹن(ڈیلی پاکستان آن لائن)امریکی صدر ٹرمپ نے عالمی ادارہ صحت سے امریکا کی علیحدگی کا باضابطہ آغاز کردیا۔ امریکا نے اقوام متحدہ کو باضابطہ طور پر نوٹس جاری کرتے ہوئے مطلع کر دیاہے کہ وہ عالمی ادارہ صحت سے علیحدہ ہوجائے گا۔

امریکی محکمہ خارجہ کے ترجمان کے مطابق صدر ٹرمپ نے اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل کو با ضابطہ طور پرآگاہ کیا ہے کہ وہ عالمی ادارہ صحت سے علیحدہ ہونے کے عمل کا آغاز کر رہے ہیں۔ علیحدگی کا عمل ایک سال بعد 6 جولائی 2021 سے موثر ہوگا۔

اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل کے ترجمان اسٹیفنے ڈوجارک نے بھی امریکہ کی طرف سے نوٹس ملنے کی تصدیق کر دی اور کہا کہ سیکرٹری جنرل امریکا کی جانب سےادارے کو چھوڑنے کی شرائط پوری کرنے کے حوالے سے ڈبلیوایچ اوسے رابطے میں ہیں۔

دوسری جانب ٹرمپ کے مجوزہ ڈیموکریٹک حریف جو بائیڈن نے کہا ہے کہ اگر نومبر کے صدارتی انتخاب میں وہ ٹرمپ کو شکست دیتے ہیں تو ڈبلیو ایچ او میں رہیں گے۔ انہوں نے ٹوئٹر پر لکھا کہ اگر منتخب ہوا تو فوری طور پر صدر ٹرمپ کے عالمی ادارہ صحت سے نکلنے کے فیصلے کو ریورس کروں گا۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ڈبلیو ایچ او سے تعلق ختم کرنے کا اعلان کیا تھا، صدرٹرمپ نے عالمی ایجنسی کی فنڈنگ بھی معطل کررکھی ہے، امریکی صدر کا الزام ہے کہ ڈبلیو ایچ او چین کے ہاتھوں کٹھ پتلی بنا ہوا ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -