مدرسے میں دیر سے کیوں آئے؟8سالہ طالب علم کے ساتھ قاری کا ایسا شرمناک سلوک کہ روح کانپ جائے

مدرسے میں دیر سے کیوں آئے؟8سالہ طالب علم کے ساتھ قاری کا ایسا شرمناک سلوک کہ ...
مدرسے میں دیر سے کیوں آئے؟8سالہ طالب علم کے ساتھ قاری کا ایسا شرمناک سلوک کہ روح کانپ جائے

  

فیصل آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) مسجد میں دیر سے آنے پر قاری نے آٹھ سالہ معصوم طالب علم کو مسجد کے ستون سے باندھ کر پلاسٹک کے پائپ سے تشدد کا نشانہ بنا ڈالا جبکہ معصوم بچے کے جسم پر ماچس کی جلتی تیلیاں بھی لگائیں۔

تفصیلات کے مطابق سمندری کی مسجد میں قائم مدرسے میں دیر سے آنے پر قاری نے معصوم طالب علم پر وحشیانہ تشدد کیا ،آٹھ سالہ بچے کو مسجد کے ستون سے باندھ کر پلاسٹک کے پائپ سے مارا ۔تھانہ سٹی کے علاقے میں واقع جامعہ مسجد کے قاری سہیل نے آٹھ سال کے معصوم بچے کو صرف اس وجہ سے ظالمانہ تشدد کا نشانہ بنا ڈالا کہ وہ مسجد میں دیر سے آیا تھا۔طالب علم حسنین نے بتایا کہ قاری نے مجھے مسجد کے ستون سے باندھ کر پلاسٹک کے پائپ سے مارا اور جسم پر ماچس کی جلتی تیلیاں بھی لگائیں۔ متاثرہ بچے کے والد محمد ارشد نے انصاف کے حصول کے لیے پولیس سے رابطہ کرلیا ہے اورپولیس سے مطالبہ کیاکہ ایسے قاری کے خلاف سخت کارروائی کی جائے۔

مزید :

علاقائی -پنجاب -فیصل آباد -