گھریلو تشدد بل خاندانی نظام کو تباہ کردے گا،عبدالرحمن سلفی 

گھریلو تشدد بل خاندانی نظام کو تباہ کردے گا،عبدالرحمن سلفی 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


کراچی (پ ر)امیر جماعت غربااہلحدیث پاکستان ورئیس جامعہ ستاریہ الاسلامیہ مولاناعبدالرحمن سلفی نے سینٹ پاکستان سے منظور ہونے والے گھریلو تشدد بل اظہار خیال کرتے ہوئے کہاہے کہ یہ بل خاندانی  نظام کو  تباہ کی راہ ہموار کریگا اور اس کے نتیجہ میں ہمارا معاشرہ بے راہ روی و انتشار کا شکار ہوجائیگا  مولانا عبدالرحمن سلفی  نے  مجلس علما کے اجلاس خطاب کرتے ہوئے کہا ظلم وتشدد ہر حال میں اسلام کیخلاف ہے لیکن اسکی آر میں  مغربی تہذیب وفکر کو رائج کرنا  ہمارے معاشرہ، خاندانی نظام اور اسلامی اقدار کے منافی ہے۔اس بل میں  قرآن وسنت سے رہنمائی علما کی کو مشاورت شامل نہیں کی گی جس کی وجہ سے غیر موثر ہوگا علما واسلامی نظریاتی کونسل کی مشاورت سے ترمیم کرکے اسے اسلامی تعلیمات و روایات اور معاشرتی اقدار و تہذیب  کے مطابق بنایا جائے تاکہ ہمارے معاشرہ وخاندانی نظام صحیح معنوں میں استحصال، ظلم وزیادتی و ناانصافی سے پاک معاشرہ کی جانب گامزن ہوسکے مجلس علما میں شیخ الحدیث مولانا محمود احمد حسن، مولانا پروفیسر حافظ محمد سلفی، مولانا عبد العزیز نورستانی، علامہ ڈاکٹر عامرعبداللہ محمدی، مولانا مفتی انس مدنی، علامہ عبدالخالق آفریدی، مولانا زاہد ہاشمی الازہری، مولانا مفتی صہیب شاہد،  مولانا مفتی عبدالوکیل ناصر،مولانا فضل ربی، مولاناابرہیم جونا گڑھی،  مولانا قاری حقانی، حاجی عبدالحنان بندہانی، مولانا سید عبدالرحیم شاہ،  مولا جاسم سلفی، مولانا برہان الدین سلفی، ودیگر نے اپنی گفتگو میں کہا پاکستان اسلامی نظریاتی مملکت ہے اور قرآن وسنت سپریم لا ہے کسی ایسے قانون کی کوئی اہمیت نہیں ہوگی جو قرآن وسنت  کے بر خلاف ہوگا علما نے کہا اس بل کو اردو کے بجائے  انگریزی زبان میں تحریر کرنا اور تیاری  وقت دئیے بغیر جلد ہی  میں پاس کرانا کسی ممکنہ سازش  کا نتیجہ ہوسکتا ہے  حکومت اس بل کے حوالے سے اپنا کردار کردار واضح  کرے اور عوام کے نمائندوں، علما ودینی جماعتوں کو اعتماد میں لیکر فی الفور اسے منسوخ کرکے اس میں آئین  کی اسلامی  دفعات کے مطابق  ترمیم کرے