الیکشن شاید 2024ءمیں بھی نہ ہوں،لطیف کھوسہ 

 الیکشن شاید 2024ءمیں بھی نہ ہوں،لطیف کھوسہ 

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app

 
کراچی (آن لائن) سابق گورنر پنجاب سردار لطیف کھوسہ نے کہا ہے کہ الیکشن 2023ءمیں ہی نہیں شاید 2024ءمیں بھی نہ ہوں، بارہ اگست کو حکومت فارغ ہوجائےگی پھر نگراں سیٹ اپ بنے گاپنجاب اور کے پی کی طرح وفاق میں بھی نگراں حکومت کے 60یا 90دن پورے نہیں ہوں گے۔آصف زرداری کو کہا تھا بلاول بھٹو کو شہباز شریف کا وزیر نہ بنائیں، پارٹی میں ہم نے کیا یہی کہنا ہے کہ ایک زرداری سب پر بھاری، اگلی باری پھر زرداری؟،نہ پیپلز پارٹی نے مجھے چھوڑا ہے نہ میں نے پیپلز پارٹی کو چھوڑا ہے، مجھے کوئی نوٹس نہیں ملا میں آج بھی پارٹی کی سینٹرل ایگزیکٹو کمیٹی میں شامل ہوں، فیصل آباد والے جو آج چوہدری بنے پھرتے ہیں انہوں نے پیپلز پارٹی کیخلاف الیکشن لڑا تھا، میں چاہتا ہوں آئین پر عمل کریں، ہم نے شریفوں اور پی ڈی ایم حکومت کا ساتھ دے کر آئین کی خلاف ورزی کی ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے نجی ٹی وی پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے کیا۔سابق گورنر پنجاب سردار لطیف کھوسہ نے کہا کہ بیس سال کی عمر میں ذوالفقار علی بھٹو کے ساتھ وابستگی اختیار کی تھی، اس وقت پیپلز پارٹی وجود میں بھی نہیں آئی تھی، 1967ء میں پیپلز پارٹی وجود میں آئی تو شامل ہوگیا، میری چار آنے کی ممبرشپ ذوالفقار علی بھٹو کے ہاتھ کی ہوئی ہے اس کی سلپ آج بھی میرے پاس موجودہے۔ 
لطیف کھوسہ 

مزید :

صفحہ آخر -