ترکی میں مظاہرے جاری ، جھڑپوں اور پٹرول بم حملوں میں متعددزخمی

ترکی میں مظاہرے جاری ، جھڑپوں اور پٹرول بم حملوں میں متعددزخمی
ترکی میں مظاہرے جاری ، جھڑپوں اور پٹرول بم حملوں میں متعددزخمی

  

استنبول(مانیٹرنگ ڈیسک) ترکی کے شہر استنبول میں حکومت مخالف مظاہروں میں مظاہرین نے پولیس پر پٹرول بموں سے حملے کیے ہیں،مظاہرین اور پولیس کے درمیان جھڑپوں میں متعدد افراد زخمی ہوگئے۔استنبول میں حکومت مخالف مظاہروں کا سلسلہ ایک ہفتے سے جاری ہے اوراستنبول کے علاقے غازی میں مظاہرین اور پولیس کے درمیان جھڑپیں ہوئیں۔مظاہرین نے پولیس پر پٹرول بم پھینکے جس کے جواب میں پولیس نے مظاہرین پر آنسو گیس کی شلینگ کی جس میں متعدد افراد زخمی ہوئے۔ ترک وزیراعظم طیب اردوگان نے مظاہروں کو غیر قانونی قرار دیتے ہوئے فوری طور پر ختم کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔یادرہے کہ استنبول میں ایک عوامی باغ کی جگہ پر سلطنتِ عثمانیہ دور کی بیرکس اور اس میں ایک شاپنگ سینٹر کی تعمیر کا منصوبہ سامنے آنے کے بعد ملک میں مظاہرے شروع ہو گئے جن کا دائرہ انقرہ سمیت دیگر شہروں تک پھیل گیا۔تجزیہ نگار اِن ہنگاموں کو غیر ملکی طاقتوں کی سازش قراردے رہے ہیں ۔

مزید : بین الاقوامی