وفاقی بجٹ میں سیاحت کے شعبے کو نظر انداز کیا جانے قابل تشویش ہے ‘ احمد شفیق

وفاقی بجٹ میں سیاحت کے شعبے کو نظر انداز کیا جانے قابل تشویش ہے ‘ احمد شفیق

لاہور( پ ر )کالج آف ٹور ازم اینڈ ہوٹل مینجمنٹ کے چیف ایگزیکٹو آفیسر احمد شفیق نے وفاقی بجٹ میں سیاحت کے شعبے کو نظر انداز کئے جانے پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ صرف سیاحت کو ترقی دے کر حکومت آنے والے سالوں میں خسارے کی بجائے متوازن بجٹ پیش کر سکتی ہے ،بجٹ میں نوجوانوں کی ترقی اور انہیں ہر مند بنانے کے لئے اعلانات قابل ستائش ہیں ۔ گزشتہ روز کوتھم کی منعقدہ تقریب میں شرکت کے موقع پر گفتگو کرتے ہوئے احمد شفیق نے کہا کہ میرا دعویٰ ہے کہ اگر حکومت سیاحت کے شعبے کیلئے ابتدائی طور پر صرف چند ارب روپے مختص کر کے اسکی ترقی کیلئے اقدامات کا فیصلہ کر لے تو آنے والے سالوں میں اس سے کئی ارب کمائے جا سکتے ہیں ۔

سیاحت ایسا سیکٹر ہے جس کے لئے بجٹ مختص کر کے حکومت کسی بھی شعبے کی نسبت جلد ریٹرن حاصل کر سکتی ہے اور کوئی وجہ نہیں کہ ہم آنے والے سالوں میں خسارے کی بجائے متوازن بجٹ پیش کر سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ دنیا کے بہت سے ممالک صرف سیاحت سے قومی مجموعی آمدنی کا ایک بڑا حصہ حاصل کر رہے ہیں اور اس میں ہر سال اضافہ ہو رہا ہے ۔انہوں نے کہا کہ حکومت کی طرف سے بجٹ میں سیاحت کے شعبے کو نظر انداز کرنا قابل تشویش ہے ۔

حکومت سے مطالبہ ہے کہ اب بھی نظر ثانی کرے اور اسکے لئے خاطر خواہ فنڈز رکھے جائیں۔

مزید : میٹروپولیٹن 4