جعلی رجسٹریوں کی روک تھام کیلئے نیا ایگزیکٹو آرڈر جاری

جعلی رجسٹریوں کی روک تھام کیلئے نیا ایگزیکٹو آرڈر جاری

 لاہور(عامر بٹ سے)محکمہ ریونیو کی ڈسٹرکٹ ایڈمنسٹریشن لاہور نے جعل سازی اور فراڈ کے ذریعے ریکارڈ میں جعلی رجسٹریاں پیسٹ کرکے لوگوں کی جائیداد یں ہتھیانے کی روک تھام کے لئے نیا ایگزیٹو آڈر جاری کر دیا،مصدقہ نقل کے حصول کے لئے اصل مالک کے خود درخواست دینے ،رجسٹری ہولڈرکے فوت ہو جانے، بیماری یا بیرون ملک جانے کی صورت میں لیگل ایڈوائزر کے ساتھ حقیقی وارثان کے موجود ہونے، کمپیوٹرائزڈشناختی کارڈ،اصل رجسٹری اور متعلقہ سب رجسٹرار کی تصدیق ضروری قرار دے دی گئی،مصدقہ نقل 7یوم کے اندر فراہم کی جائے گی ،انٹری رجسٹرپر روزانہ کی بنیاد پر ریکارڈ کیپر،رجسٹرری محرر اورسب رجسٹرار کے دسخظ لازم قرار، تمام سب رجسٹرارز کو تحریری احکامات جاری کر دیئے گئے ،معلومات کے مطابق بہت دیر کر دی مہربان آتے آتے، بلاآخر محکمہ ریونیو کے اعلیٰ انتظامی افسران کو رجسٹریشن ایکٹ پر عمل درآمد اور لوگوں کی جائیدادوں کے تحفظ کا خیال آہی گیا ،جوہرٹاؤن میں واقع 90کنال سرکاری اراضی کی داتاگنج بخش ٹاؤن کی مصدقہ نقول برانچ کے اہلکاروں کی ملی بھگت سے ریکارڈ میں جعلی رجسٹری پیسٹ کئے جانے کے سکینڈل اور کئی روز تک سرکاری اہلکاروں اور اینٹی کرپشن میں آنکھ مچولی کے بعد ریونیو کے انتظامی افسران نے لاہور کی تمام رجسٹریشن برانچز کے سب رجسٹرارز کو ایک چھٹی نمبر 3053مورخہ 05-06-2015 جاری کی ہے جس میں مصدقہ نقل کے حصول کے لئے قوانین اور احکامات جاری کئے گئے ہیں ،جس کے مطا بق مصدقہ نقل کے حصول کے لئے درخواست گزار بذات خود اصل قو می شناختی کارڈاور رجسٹری کے ہمراہ متعلقہ سب رجسٹرار کے سامنے پیش ہو کر درخواست دے گا،سب رجسٹرار کی تصدیق کے بعد 7یوم کے اندر مصدقہ نقل فراہم کی جائے گی ،رجسٹری ہولڈر کے فوت ہوجانے یا بیماری کی صور ت میں اس کے حقیقی وارثان ڈیتھ سرٹیفکیٹ یا بیماری کے سرٹیفکیٹ کے ساتھ بمہ اصل شناختی کارڈ اور رجسٹری متعلقہ سب رجسٹرار کو درخواست برائے حصول مصدقہ نقل دے سکتے ہیں ،حقیقی وارثان کے شناختی کارڈ نمبروں اور خاندان نمبروں کی تصدیق کے بعد سب رجسٹرار درخواست پر دستخط کرے گا،اس کے ساتھ اگر رجسٹری ہولڈر بیرون ملک گیا ہے تو اس کا لیگل ایڈوائزر ،پاسپورٹ کی فوٹو کاپی ،قومی شناختی کارڈ اور رجسٹری کے ہمراہ متعلقہ سب رجسٹرار کو درخواست دے سکتا ہے متعلقہ سب رجسٹرار کی تصدیق کے بعد مصدقہ نقل سائل کو فراہم کی جائے گی،انٹری رجسٹرر کو بھی روزانہ کی بنیاد پر اپ ڈیٹ کیا جائے گا جس پر تمام ضروری دستاویزات کے حوالہ نمبر درج ہونے کے ساتھ ریکارڈ کیپر متعلقہ رجسٹری محرر اورسب رجسٹرار کے دستخط ہو نگے تاکہ کسی کوتاہی کی صورت میں صرف ایک ہی شخص کو مورود الزام نہ ٹھہرایا جا سکے ،مذکورہ بالا ایگزیکٹو آڈر کے بارے عوام نے ملے جلے تاثرات کا اظہار کیا ہے شہری محمد منیر ،قاسم ،شبیر احمد اور ساجد محمود نے بتایا کہ یہ کام تو بہت پہلے ہو جانا چاہیے تھا جس کو اب شروع کیا جارہا ہے ،لیکن ہمارے افسران کو عوام کا خیال اس وقت آتا ہے جب ان کی کارکردگی پر خود حرف آتا ہے ،پھر اپنے آپ کو بچانے کے لئے ایگزیٹو آڈر جاری کر نا شروع کر دیتے ہیں ،شہری محمدامجد ،عمر علی ،ارسلان ڈوگر نے کہا کہ یہ سب قوانین تو پہلے ہی رجسٹریشن ایکٹ میں موجود ہیں کہ مصدقہ نقل کے حصول کے لئے سب رجسٹرار کی تصدیق اور دستخط ضروری ہیں لیکن اس کے باوجود مصدقہ نقول برانچ کی چابیاں کلرکوں کو دے دی گئیں بلکہ وہ خود سب رجسٹرار کے دستخط کرکے مصدقہ نقل جاری کرنے کا مجاز تھا جس کا خمیازہ عوام کے ساتھ ریونیو کے انتظامی افسران کو بھی بھگتنا پڑا ہے ،کیا اس آڈر سے یہ تاثر لیا جائے رجسٹریشن ایکٹ کا کسی کو پتہ نہیں ہے یا اپنے مفادات کی خاطر ان پر عمل درآمد نہیں کیا جاتا ہے اور جہاں اپنی ساکھ متاثر ہونے خطرہ لاحق ہوتا ہے وہاں فوری قوانین جاری ہو نا شروع ہو جاتے ہیں ،یہ ایگزیٹو آڈر اور احکامات داتا گنج بخش ٹاؤن کی مصدقہ نقول برانچ سکینڈل کے بعد ہی کیوں جاری کیا گیا ہے اس سے پہلے کیا سب ٹھیک تھا ،کیاانتظامی افسران کو علم نہیں تھا،اب اتنے دن عوام کو ذلیل وخوار کرنے کے اور اپنے ادارے کو بدنام کرنے بعد ایگزیٹو آڈر جاری کرنے کا کیا فائدہ ہے ،شہر ی عاقل بٹ،محمد آصف،خرم شہزاد نے کہا ہے کہ متذکرہ بالا ایگزیٹو آڈر ایک احسن اقدام ہے جس سے شہریوں کی جائیدادوں کے تحفظ کے ساتھ قبضہ مافیا کے ایجنٹوں کا راستہ بھی رک جائے گااور عوام میں بھی احساس تحفظ پیدا ہو گا کہ ان کی جائیدادیں محفوظ ہیں ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1