مالی سال 2015-16کیلئے وفاقی بجٹ متوازن ہے: سابق چیئرمین ایل ایس ای

مالی سال 2015-16کیلئے وفاقی بجٹ متوازن ہے: سابق چیئرمین ایل ایس ای

لاہور(اے پی پی) لاہور سٹاک ایکسچینج کے سابق چیئرمین سید عاصم ظفر نے نئے مالی سال 2015-16ء کے وفاقی بجٹ کو ایک متوازن بجٹ قرار دیا ہے اور کہا ہے کہ وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے سٹاک مارکیٹ کی کارکردگی کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ سٹاک مارکیٹ کے انڈیکس میں 70فیصد اضافہ ہوا اور کراچی سٹاک مارکیٹ کا 100انڈیکس 34ہزار پوائنٹس کی حد تک پہنچ گیا ہے جو حکومت کی بہترین معاشی پالیسیوں کا نتیجہ ہے ۔انہوں نے وفاقی بجٹ پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ملکی معیشت کی کارکردگی اس کی سٹاک مارکیٹ سے ظاہر ہوتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ وزیر خزانہ سٹاک مارکیٹ اور مرکنٹائل ایکسچینج پر عائد ٹیکسوں پر نظرثانی کریں ۔ایک سوال کے جواب میں سید عاصم ظفر نے کہا کہ بجٹ میں تعمیرات،ہاؤسنگ اور زراعت کے شعبوں کو دی جانے والی مراعات سے ملک میں صنعتی و تجارتی سرگرمیوں میں اضافہ ہو گا ۔غریب کاشتکاروں کو سولر ٹیوب ویل کیلئے بلاسود قرضوں کا اجراء بھی ایک اچھا قدم ہے جس سے کاشتکاوں کی پیداواری لاگت میں کمی آئے گی اور زرعی اجناس کی پیداوار میں اضافہ ہو گا ۔انہوں نے ٹیکسٹائل کے شعبے کیلئے 64ارب روپے کے پیکج کو سراہا اور کہا کہ شرح سود میں کمی سے برآمدکنندگان کو فائدہ پہنچے گا، اس کے علاوہ حکومت کی جانب سے برآمدکنندگان کے اربوں روپے کے رکے ہوئے سیلز ٹیکس ریفنڈز کی فوری ادائیگی سے بھی ان کی مالی مشکلات کم ہوں گی اور انہیں اپنی برآمدات بڑھانے میں مدد ملے گی۔سید عاصم ظفر نے ایک سوال کے جواب میں بتایا کہ مسلم لیگ (ن) کی حکومت نے وفاقی بجٹ میں سب سے زیادہ مراعات خیبر پختونخواہ صوبے کو دی ہیں جہاں کے صنعتکاروں کو صنعتیں لگانے پر پانچ سال کیلئے ٹیکسوں کی چھوٹ دی گئی ہے جبکہ افغانستان کے ساتھ پاکستانی روپے میں تجارت کرنے کی اجازت سے بھی وہاں کے صنعتکاروں کو فائدہ پہنچے گا ۔

انہوں نے کہا کہ وفاقی بجٹ میں حلال گوشت کی پیداوار اور اس کی ایکسپورٹ بڑھانے کیلئے اس سیکٹر کو ٹیکسوں اور ڈیوٹیوں میں چھوٹ دینا بھی ایک خوش آئند قدم ہے جس سے پاکستان کی حلا ل گوشت اور اس کی مصنوعات کی برآمدات میں اضافہ ہو گا ۔

مزید : کامرس