سپریم کورٹ نے بجلی کے بلوں میں اضافی سر چارجز کی وصولی روکنے کافیصلہ معطل کر دیا

سپریم کورٹ نے بجلی کے بلوں میں اضافی سر چارجز کی وصولی روکنے کافیصلہ معطل کر ...
سپریم کورٹ نے بجلی کے بلوں میں اضافی سر چارجز کی وصولی روکنے کافیصلہ معطل کر دیا

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)سپریم کورٹ نے بجلی کے بلوں میں اضافی سرچارجز کی وصولی سے متعلق لاہور ہائیکورٹ کے فیصلے کو معطل کر دیاہے ۔

تفصیلات کے مطاق چیف جسٹس ناصرالملک کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے 3 رکنی بینچ نے بجلی کے بلوں میں اضافی سرچارج کی وصولی سے متعلق لاہور ہائی کورٹ کے فیصلے کے خلاف وزارت پانی و بجلی کی درخواست کی سماعت کی۔ جس دوران اٹارنی جنرل نے اپنے دلائل میں موقف اختیار کیا کہ صارفین سے بجلی کے بلوں میں ڈیبٹ سرچارج، نیلم جہلم سرچارج اور ایکولائزیشن سرچارج کی وصولی نیپرا قوانین کے مطابق ہے ، مختلف عدالتوں میں ان سرچارجز کی وصولی پہلے بھی چیلنج ہوئی جسے عدالتوں نے مسترد کردیا۔ اس لئے عدالت عظمیٰ لاہور ہائی کورٹ کے فیصلے کو کالعدم قرار دے۔

نجی کمپنی کے وکیل خواجہ فاروق نے دلائل میں کہا کہ اضافی سرچارجز کی وصولی سب سیکشن ایک سے چار کی خلاف ورزی ہے ،حکومت می جانب سے لگائے گئے سرچارجز دراصل ٹیکس ہے اور کوئی بھی ٹیکس پارلیمنٹ کی منظور ی کے بغیر نہیں لگایا جاسکتاہے ۔

عدالت نے دلائل سننے کے بعد درخواست سماعت کیلئے منظور کرتے ہوئے لاہور ہائیکورٹ کے فیصلے کو تاحکم ثانی معطل کر دیاہے ۔

مزید : قومی /اہم خبریں