ڈاکٹر عامر لیاقت نے مبینہ طور پر ایف آئی اےکے سامنے ڈگری جعلی ہونے کا اعتراف کرلیا

ڈاکٹر عامر لیاقت نے مبینہ طور پر ایف آئی اےکے سامنے ڈگری جعلی ہونے کا اعتراف ...
ڈاکٹر عامر لیاقت نے مبینہ طور پر ایف آئی اےکے سامنے ڈگری جعلی ہونے کا اعتراف کرلیا

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

کراچی (ویب ڈیسک)معروف اینکر پرسن ڈاکٹر عامر لیاقت نے مبینہ طورپر ایف آئی اے کو دیے گئے بیان میں اعتراف کر لیاہے کہ انہوں نے ایگزیکٹ سے جعلی ڈگری حاصل کی تھی ۔

مزیدپڑھیں:مردانگی دکھانے والے مردوں کا پول کھل گیا،سائنسدانوں نے ایسی حرکتوں کے پیچھے چھپی شرمناک وجہ بتا دی

نجی ٹی وی چینل اے آر وائے نیوز نے ایف آئی اے ذرائع کے حوالے سے کہاہے کہ ڈاکٹر عامر لیاقت نے اعتراف کیاہے کہ انہوں نے 1136ڈالر کے عوض اشہود یونیورسٹی کی ڈگری خریدی تھی اور اس ضمن میں انہو ں نے اپنے دوست کا کریڈٹ کارڈ استعمال کرتے ہوئے اپنے موبائل فون کے ذریعے پیسے ادا کیے تھے۔

ڈاکٹر عامر لیاقت نے اشہود یونیورسٹی سے تاریخ کے مضمون کی ڈگری حاصل کی تھی ۔ایگزیکٹ کے مین سرور سے برآمد ہونے والے ڈیٹاکے مطابق عامر لیاقت کی جیو کی 2012کی پروفائل میں بھی یہی ڈگری منسوب کی گئی ہے ۔

اے آر وائے کا کہناہے کہ ایف آئی اے کے ذرائع نے اس بات تصدیق بھی کی ہے کہ جو ڈگری حاصل کی گئی اس سے متعلق ڈیٹا بھی ایگزیکٹ کے سرور سے ملاہے اور عامر لیاقت کے ای میل ایڈریس بھی ایگزیکٹ کے مین سرور سے برآمد ہو ئے ہیں ۔

نجی ٹی وی چینل کا کہناہے کہ ایف آئی اے کی جانب سے دستاویز ی ثبوت پیش کرنے پر عامر لیاقت نے ایف آئی اے کے ڈائریکٹر شاہد حیات کے سامنے تسلیم کیا کہ ڈگری جعلی ہے ۔

مزید : کراچی