گلگت بلتستان قانون ساز اسمبلی الیکشن ، نتائج مکمل ، مسلم لیگ ن14 نشستوں پر کامیاب ،وزیراعلیٰ ن لیگ کا ہو گا

گلگت بلتستان قانون ساز اسمبلی الیکشن ، نتائج مکمل ، مسلم لیگ ن14 نشستوں پر ...
گلگت بلتستان قانون ساز اسمبلی الیکشن ، نتائج مکمل ، مسلم لیگ ن14 نشستوں پر کامیاب ،وزیراعلیٰ ن لیگ کا ہو گا

  

گلگت( مانیٹرنگ ڈیسک ) گلگت بلتستان قانون ساز اسمبلی کے انتخابات کے نتائج سامنے آرہے ہیں اور ان انتخابات میں بڑے بڑے برج الٹ گئے ہیں،سابق حکمران جماعت پاکستان پیپلزپارٹی محض ایک نشست جیتنے میں کامیاب ہوسکی۔اب تک سامنے آنیوالے 24میں سے 23کے غیر حتمی نتائج کے مطابق پاکستان مسلم لیگ ن کے امیدواروں کو 14نشستوں پر برتری حاصل ہے ۔

گلگت الیکشن میں حکومتی جماعت مسلم لیگ ن نے واضح اکثریت حاصل کر لی ہے جس کے بعد گلگت بلتستان کا وزیراعلیٰ بھی ن لیگ کا ہو گا۔

20 حلقوں کے مکمل غیر سرکاری غیر حتمی نتائج کے مطابق مسلم لیگ ن کے 10 ، پاکستان تحریک انصاف 3 ، وحدت المسلمین اور اسلامی تحریک پاکستان 2,2 جبکہ 2 آزاد امیدوار بھی الیکشن جیتنے میں کامیاب ہو گئے ہیں۔ گلگت بلتستان میں حکومتی جماعت پاکستان پیپلز پارٹی محض ایک نشست حاصل کرنے میں کامیاب ہوئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق ہنزہ کے حلقہ 6 ، گانچھے حلقہ 23 اور حلقہ 1 سمیت دیامر حلقہ 18 سے حکمران جماعت مسلم لیگ ن جبکہ ہنزہ کے حلقہ 5 سے وحدت المسلمین کے امیدوار کامیاب ہوئے ہیں۔

سکردو کے حلقہ 7سے پی ٹی آئی کے امیدوار راجہ جلال نے ن لیگ کے امیدوار اکبر تابان کو ایک ووٹ سے شکست دے دی ہے ۔پی ٹی آئی کے امیدوار نے 3374ووٹ حاصل کیے جبکہ ن لیگ کے امید وار نے 3373ووٹ حاصل کیے۔

سکردو کے حلقہ نمبر 10سے اسلامی تحریک پاکستان کے امیدوار سکندر مرزا نے میدان مار لیاہے ۔اسلامی تحریک کے امیدوار نے4955ووٹ حاصل کیے جبکہ وحدت مسلمین کے امیدوار راجہ ناصر نے 4929ووٹ حاصل کیے۔

ہنزہ حلقہ 6 میں مسلم لیگ ن کے امیدوار میر غضنفر علی 6 ہزار 384 ووٹ حاصل کر سکے اور ان کے مد مقابل عوامی ورکرز پارٹی کے بابا جان 3 ہزار 574 ووٹ حاصل کر سکے ہیں۔اس حلقے میں ووٹنگ ٹرن آﺅٹ 44 فیصد رہا جبکہ حلقہ میں کل رجسٹرڈ ووٹرز کی تعداد 36 ہزار 417 ہیں۔

دوسری جانب گانچھے حلقہ 23 میں غلام حسین ایڈووکیٹ 6 ہزار 132 ووٹ حاصل کر کے کامیاب ہوئے۔ مسلم لیگ ن کے امیدوار غلام حسین ایڈووکیٹ نے تحریک انصاف کی امیدوار آمنہ انصاری کو شکست دی اور آمنہ انصاری 4 ہزار 978 ووٹ حاصل کر سکی ہیں۔ گانچھے کے حلقہ 23میں کل ووٹرز کی تعداد 23 ہزار 187 ہے جبکہ اس حلقے میں ووٹنگ ٹرن آﺅٹ 61 فیصد رہا ہے۔

اس کے علاوہ غیر سرکاری نتائج کے مطابق حلقہ 18دیامیر سے مسلم لیگ ن کے محمد وکیل کامیاب قرار پائے ہیں اور انہوں نے 3500ووٹ حاصل کیے ہیں جبکہ دوسرے نمبر پر جے یوآئی ف کے حاجی گلبرخان رہے جنہوں نے 2180ووٹ حاصل کیے ہیں۔

گلگت بلتستان کے حلقہ 5 ہنزہ سے غیرسرکاری نتائج کے مطابق مجلس وحدت المسلمین کے رضوان علی کامیاب ہوئے ہیں اور انہوں نے 2436ووٹ لیے ہیں۔ان کے مد مقابل آزاد امیدوار پرنس قاسم علی 1932ووٹوں کیساتھ دوسرے نمبر پر رہے۔ حلقہ پانچ میں کل رجسٹرڈ ووٹرز کی تعداد 11992ہے جبکہ حلقے میں ٹرن آﺅٹ 52فیصدرہا۔

گانچھے کے حلقہ 1 سے مسلم لیگ ن کے امیدوار ابراہیم ثنائی نے تحریک انصاف کی آمنہ انصاری کو شکست دی ہے۔ مسلم لیگ ن کے امیدوار ابراہیم ثنائی نے مجموعی طور پر 11ہزار 655 ووٹ حاصل کیے ہیں جبکہ ان کے مد مقابل آمنہ انصاری محض 1 ہزار 755 ووٹ ہی حاصل کر سکی ہیں۔

مزید : گلگت /Headlines