بول کے خلاف سازش میں وزیراعظم پاکستان ملوث ہیں :سمیع ابراھیم

بول کے خلاف سازش میں وزیراعظم پاکستان ملوث ہیں :سمیع ابراھیم
بول کے خلاف سازش میں وزیراعظم پاکستان ملوث ہیں :سمیع ابراھیم

  

کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک) معروف صحافی سمیع ابراھیم نے کہا ہے کہ بول کو بند کرنے کی سازش بہت بڑی سطح پر کی گئی اور اس میں وزیراعظم نواز شریف بھی ملوث ہیں ۔

بول نیوزپرمبشر لقمان کے پہلے پروگرام ’میری جنگ مبشر لقمان کے ساتھ‘میں سمیع ابراھیم نے وزیراعظم پاکستان پر بڑا الزام لگاتے ہوئے کہا کہ بول کو بند کرنے کی سازش میں وزیراعظم پاکستان بھی شامل ہیں ۔ان کا کہناتھا کہ اس وقت وزارت اطلاعات پرویز رشید نہیں مریم نواز دیکھ رہی ہیںاور وزیراعظم نے جیو کے ساتھ ساز باز کی ہے کہ جیو عمران خان کی مخالفت کرے اور ہم بول کو روکتے ہیں ۔ان کا کہنا تھا کہ ڈیکلن والش کی کہانی سکرپٹ کا حصہ تھی حکومت سب کچھ پہلے سے پتا تھااور منی لانڈرنگ کی بات اس لیے کی گئی کہ ایف بی آئی کو اس معاملے میں گھسیٹا جائے ۔ان کا مزید کہنا تھا کہ نیویارک ٹائمز کا ایڈیٹوریل بورڈ کا کنٹرول وقاص بجاج کے پاس ہے جو کہ انڈین امریکن ہے۔

مبشر لقمان کا کہنا تھا کہ پیمرا کے کاغذات میں موجود ہے کہ جیو 3ارب 73کروڑ کا ڈیفالٹر ہے اور جنگ گروپ نے نیشنل بینک کے1.7ارب دینے ہیں اور اس کیلئے بینک نے سندھ ہائی کورٹ سے بھی رجوع کیا ہے مگر اس کے بارے میں کوئی بات نہیں کرتا۔مبشر لقمان کا کہنا تھا بول کے خلاف سب کچھ سوچی سمجھی سازش کے تحت کیا جا رہا ہے اس کے پیچھے جنگ گروپ کا ہاتھ ہے ۔ان کا کہنا تھا کہ جیو پر چلنے والی مہمات ذراسوچئے اور امن کی آشا میں سب بیرونی فنڈنگ تھی اور یہ سب بیرونی ہاتھ کے اشارے پر کیا گیا ۔ انہوں نے اپنے پروگرام میں مزید کہا کہ اجمل قصاب کا معاملہ ہی لیا جائے تو پتا چل جائے گا کہ کون محب وطن ہے جیو نے سب سے پہلے خبر نشر کی کہ اجمل قصاب کا تعلق فرید کوٹ پاکستان سے ہے ۔

ایف آئی کی ایگزیکٹ کےخلاف کاروائی پر مبشر لقمان نے واضح کیا کہ ایف آئی اے کے دفتر میں جو کچھ ہو رہا ہے وہ میڈیا میں دکھایا جا رہا ہے اس کا مطلب یہ ہے یہ سب سوچی سمجھی سازش ہے ۔ان کا کہنا تھا کہ کئی نیوزچینلوں یہ خبر نشر کی گئی کہ بول نے اعتراف جرم کر لیا ایسی کوئی بات نہیں ہے جب کوئی جرم ہی نہیں تو اعتراف جرم کیسا۔ان کا مزید کہنا تھا کہ آج صبح جب شعیب شیخ کو عدالت میں پیش کرنے کیلئے لاک اپ سے لایا جا رہا تھا تو ان کے سینے پر لگا پاکستان پرچم کہی کھو گیا انہوں نے 10منٹ تک انتظار کیااور جب تک پاکستانی پرچم نہیں آیا وہ عدالت پیش نہیں ہوئے اورلیکن جب وہ اور ان کے ساتھی پیش ہوئے تو ہزاروں لوگ ان کے والہانہ استقبال کیلئے موجود تھے اور انہیں دعائیں دے رہے تھے ۔انہوں نے واضح کیا کہ ایک بے بنیادخبرپر ایک شخص کی 20سال کی خدمات پر پانی پھیرا گیا اور اس کا نام بدنام کیا گیا جو کہ درست نہیں ہے مگر اس شخص کو عدلیہ پر یقین ہے اور اسے انصاف مل کے رہے گا۔

مبشر لقمان نے اپنے پروگرام واضح کیا کہ جب بول کی باقاعدہ ٹرانسمیشن شروع ہوگی تو ہم نہ صرف مسائل کی نشاندہی کریں گے بلکہ ان کا حل بھی پیش کریں گے اور یہی فرق ہوگا بول اور دوسرے نیوز چینلز میں ۔مبشر لقمان نے کہا کہ مجھے سمیع ابراھیم نے8ماہ پہلے منع کیا تھا کہ بول کو جوائن مت کرنا کیونکہ سی آئی اے حکام اس کی مخالفت کر رہے ہیں اور اس کے پیچھے امریکن لابی کا ہاتھ ہے۔

مزید : قومی /اہم خبریں