خیر پور :مختلف محکموں میں کروڑوں کی مالی بے ضابطگیوں کا انکشاف

خیر پور :مختلف محکموں میں کروڑوں کی مالی بے ضابطگیوں کا انکشاف

کراچی (اسٹاف رپورٹر)وزیراعلی سندھ کے ضلع خیرپور کے مختلف محکموں میں 17 کروڑ86 لاکھ روپے سے زائد کی مالی بے ضابطگیوں کا انکشاف ہوا ہے، سندھ اسمبلی کی پبلک اکاؤنٹس کمیٹی نے ڈپٹی کمشنر خیرپور کو محکمہ تعلیم صحت ورکس اینڈ سروسز میں بدعنوانیوں کی تحقیقات کرکے ایک ماہ میں رپورٹ پیش کرنے کی ہدایت کی ہے۔منگل کو پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کے چیئرمین سلیم رضا جلبانی کی زیر صدارت اجلاس میں ضلعی حکومت خیرپورکے مالی سال دوہزار گیا رہ اور بارہ کے حسابات کا جائز ہ لیا گیا ۔ضلعی حکومت کے زیر انتظام تعلیم، صحت ، ورکس اینڈسروسزکے ترقیاتی بجٹ میں ،ادویات ،ایکسرے مشین دیگرآلات کی خریداری سمیت خلاف ضابطہ بھرتی کئے گئے ملازمین کے نام پر قومی خزانے کو سترہ کروڑ چھاسی لاکھ روپے کا چونا لگانے کا انکشاف ہوا،محکمہ صحت اورتعلیم کے افسران دوہزارگیارہ اوربارہ میں خرچ کی گئی رقم کا ریکارڈ پی اے سی کوپیش کرنے میں ناکام رہے ایک موقع پرڈپٹی کمشنرکا کہنا تھا کہ خیرپورمیں والی بال کے ایک ٹورنامنٹ میں کسی منظوری کے بغیراٹھارہ لاکھ روپے اس لیے خرچ کردیے گئے کہ وزیراعلی سندھ کواس میں شرکت کرنا تھی ۔ اپوزیشن رکن سورٹھ تھیبونے ڈپٹی کمشنرسے سوال کیا کہ ڈی سی صاحب کیا جس پروگرام میں وزیراعلی سندھ قائم علی شاہ نے شرکت کرنی ہو توکیا قانون اندھا دھند رقم خرچ کرنے کی اجازت دیتا ہے۔ جس پرڈپٹی کمشنرنے کہاکہ ہم اپنی غلطی تسلیم کرتے ہیں اورپی اے سی کی ہدایت پرمعاملے کی تحقیقات کریں گے۔ ڈپٹی کمشنرخیرپورفیاض جتوئی نے مالی اخراجات کاریکارڈ پیش کرنے کے لیے پی اے سی سے مہلت طلب کی ۔تعلقہ اسپتال کوٹ ڈیجی کے لیے ایکسرے مشین دیگرآلات کی خریداری میں ضلعی حکومت خیرپور18 ملین روپے کا ریکارڈ بھی پیش نہ کرسکی۔اجلاس میں انکشاف ہوا کہ محکمہ تعلیم خیرپورمیں بعض ایسے ملازمین بھرتی کیے گئے جن کی عمرابھی 18 برس نہیں ہوئی تھی۔پبلک اکاؤنٹس کمیٹی کے چیئرمین سلیم رضا جلبانی نے ضلعی حکومت خیرپور کی مالی بے ضابطگیوں کی تحقیقات اورخورد برد کی گئی رقم برآمد کرانے کا حکم دیا اورکہاکہ ایک ماہ میں رپورٹ پی اے سی اجلا س میں پیش کی جائے ۔ کرکے ایک ماہ میں کمیٹی کے سامنے رپورٹ پیش کی جائے ۔انہون نے کہاکہ اکثر ضلعی حکومتوں کے مالی اخراجات کے دوران بیشتر افسران کے خلاف قوائد وضابط کو بلا طاق رکھ کے اخراجات میں من مانیوں کی شکایات ملی ہیں

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر