زندہ جلائی جانے والی زینت کی ماں گرفتار، بیٹی کی گھر سے بھاگ کر شادی برداشت نہیں ہوئی اس لیے مار د یا : والدہ

زندہ جلائی جانے والی زینت کی ماں گرفتار، بیٹی کی گھر سے بھاگ کر شادی برداشت ...
زندہ جلائی جانے والی زینت کی ماں گرفتار، بیٹی کی گھر سے بھاگ کر شادی برداشت نہیں ہوئی اس لیے مار د یا : والدہ

  

لاہور (مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان میں غیرت کے نام پر ہونے والے قتل میں اکثر باپ یا بھائی ملوث ہوتے ہیں جبکہ ماں اکثر اپنی بیٹیوں کیلئے ڈھال کا کام کرتی ہے لیکن والٹن روڈ کی زینت کی بدقسمتی تھی کہ اس کی ماں نے ہی اس کو زندہ جلادیا۔

ابتدائی تفتیش کے بعد پولیس کو پتا چلا ہے کہ زینت نامی لڑکی نے حسن نامی لڑکے سے پسند کی شادی کی جس پر زینت کی ماں رخصتی کے بہانے بیٹی کو واپس گھر لے آئی اور آکر زندہ جلادیا۔ پولیس جب جائے وقوعہ پر پہنچی تو لڑکی کی لاش سیڑھیوں پر پڑی تھی ۔ زینت کی ماں پروین کا کہنا ہے کہ بیٹی کی گھر سے بھاگ کر شادی برداشت نہیں ہوئی اس لیے اسے مار د یا ۔

پولیس نے مقتولہ زینت کی ماں پروین بی بی کو حراست میں لے کر تفتیش کا عمل شروع کردیا ہے ۔علاوہ ازیں زینت کے دو بھائی ہیں جو دبئی میں مقیم ہیں زینت کا ایک بھائی انیس چند روز قبل پاکستان آیا تھا جو کہ اب فرار ہے اور شبہ ہے کہ و ہ بھی زینت کو جلانے میں ملوث ہے۔

مزید : لاہور