25ہزار سکولوں کی حالت خراب خدیجہ فاروقی کی تحریک التواء جمع

25ہزار سکولوں کی حالت خراب خدیجہ فاروقی کی تحریک التواء جمع

  

لاہور(جنرل رپورٹر) مسلم لیگ (ق )کی رکن صوبائی اسمبلی خدیجہ عمرفاروقی نے پنجاب کے25ہزار سرکاری سکول بھوت بنگلوں کا منظر پیش کرنے اور ان میں کلاس روم نہ چاردیواری، پانی وبجلی سے محروم ہونے پر پنجاب اسمبلی میں تحریک التوائے کار جمع کرواد ی۔اپنی تحریک التوائے کار جمع کروانے کے بعد صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ حکومت پنجا ب کے تعلیمی بجٹ میں ہر سال کمی کی جارہی ہے جبکہ دوسری طرف تمام فنڈز من پسند منصوبوں پر خرچ کیے جارہے ہیں ۔پنجاب کے تعلیمی بجٹ میں4فیصد تک کمی ہوئی جبکہ دوسری طر ف72 فیصد سکول صاف پانی،19فیصد بیت الخلاء،18فیصد بجلی،21فیصد چاردیواری جبکہ 26فیصد اساتذہ سے بھی محروم ہیں ۔انہوں نے کہا کہ رواں مالی سال نئے کمرے بنانے کیلئے15ارب مختص ہوئے لیکن خرچ صرف2ارب47کروڑ ہوئے کلاس رومز پھر بھی نہ بن پائے باقی فنڈز غیر ضروری سکیموں پر خرچ ہوگئے ۔خدیجہ فاروقی نے کہا کہ سکولوں میں بنیادی سہولیات کی فراہمی کے بغیر معیار تعلیم بلند نہیں ہوگا ۔پنجاب کے سرکاری سکولوں میں بنیادی سہولیات نہ ہونے کے باعث معاملات انتہائی دگرگوں ہوگئے ہیں24ہزار966سرکاری سکولوں کا انتہائی برا حال ہے کلاس رومز ہیں نہ ہی چاردیواری ،بیت الخلاء نہ بجلی حتیٰ کہ کئی جگہ تو اساتذہ تک موجود نہیں ایسے میں حکومت کی طرف سے شعبہ تعلیم کی بہتری کے بڑے دعوے زمینی حقائق سے کوئی مطابقت نہیں رکھتے ۔صوبے کے 72فیصد سرکاری سکول پینے کے صاف پانی سے بھی محروم ہیں۔لاہور،گوجرانوالہ،لودھراں ،خانیوال اوکاڑہ، ساہیوال،پاکپتن،فیصل آباد، شیخوپورہ، سیالکوٹ، راجن پور،بہاولپور،بہاولنگر ،رحیم یار خان ،ملتان ،نارووال،لیہ، چکوال،راولپنڈی کے اضلاع میں سکولوں کے نئے کمرے نہ بن سکے جس کے باعث بچے کھلے آسمان یادرختوں تلے زمین پر بیٹھ کر تعلیم حاصل کرنے پر مجبور ہیں انہوں نے کہا کہ سکولوں کی حالت زار بہتربنانے کیلئے سپیڈ پنجاب کی اصطلاح استعمال کی جائے اور فنڈز مختص کرکے سکولوں کی حالت بہتر بنائی جائے تاکہ نوجوان نسل کو بہتر تعلیمی سہولیات فراہم ہوسکے۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -