ڈیرہ نواب سٹیشن سے ہیڈ پنجند کے درمیان 13ہزار فٹ ریلوے ٹریک اکھاڑنے کی اجازت

ڈیرہ نواب سٹیشن سے ہیڈ پنجند کے درمیان 13ہزار فٹ ریلوے ٹریک اکھاڑنے کی اجازت

لاہور(نامہ نگارخصوصی )لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس عاطر محمود نے حکومت پنجاب اور ریلوے کے درمیان تنازع کی درخواست نمٹاتے ہوئے محکمہ آبپاشی پنجاب کو جنوبی پنجاب میں موجود ڈیرہ نواب ریلوے سٹیشن سے ہیڈپنجند کے درمیان موجود 13ہزار فٹ ریلوے ٹریک اکھاڑنے کی اجازت دے دی۔عدالت نے دوران سماعت ریمارکس دیئے کہ زبانی بیان بازی کی بجائے اس وقت کے معاہدہ کو منظر عام پر لانا ریلوے کا کام تھا،عدالت مہم بیان بازی پرریلوے کی ملکیت کے دعوی کو درست تسلیم نہیں کر سکتی۔محکمہ آبپاشی پنجاب کی جانب سے عدالت کو بتایا گیا کہ جنوبی پنجاب کے علاقے ڈیرہ نواب ریلوے سٹیشن سے ہیڈ پنجند کا درمیانی علاقہ محکمہ آبپاشی کی ملکیت ہے۔انہوں نے کہا کہ عباسیہ کینال پر پلوں کی تعمیر کے لئے 13ہزار فٹ ریلوے ٹریک اکھاڑنے کے لئے نجی کمپنی کو ٹھیکہ فراہم کیا تو محکمہ ریلوے نے ٹریک پر اپنی ملکیت کے حق میں نوٹیفکیشن جای کر دیا۔محکمہ ریلوے کے وکیل سلمان کاظمی نے عدالت کو آگاہ کیا کہ انیس سو تئیس میں ریاست بہاولپور اور ریلوے کے درمیان ہونے والے معاہدے کے تحت یہ اراضی اور ٹریک ریلوے کی ملکیت ہیں،اگر ٹریک اکھاڑنے کی اجازت دی گئی تو ڈیرہ نواب ریلوے سٹیشن تک جانے والا ٹریک اکھاڑنے سے ریلوے کو ناقابل تلافی نقصان پہنچے گا۔عدالت نے ریمارکس دیئے کہ زبانی بیان بازی کی بجائے اس وقت کے معاہدہ کو منظر عام پر لانا ریلوے کا کام تھا،ریلوے کے مصروف ترین ٹریک اکھاڑ لئے گئے مگر کسی پر ذمہ داری نہیں ڈالی گئی،عدالت مہم بیان بازی پرریلوے کی ملکیت کے دعوی کو درست تسلیم نہیں کر سکتی۔عدالت نے درخواست نمٹاتے ہوئے محکمہ آبپاشی کی زمین پر موجود ٹریک اکھاڑنے کی اجازت دے دی ہے۔

مزید : صفحہ آخر