بجٹ 2017-18جنوبی پنجاب کی عدالتوں کیلئے صرف 16کروڑ سے زائد کی 12سکیمیں

بجٹ 2017-18جنوبی پنجاب کی عدالتوں کیلئے صرف 16کروڑ سے زائد کی 12سکیمیں

  

ملتان (خبر نگار خصو صی) جنوبی پنجاب کیلئے رکھی گئی جاری سکیموں میں جوڈیشل کمپلیکس ملتان کیلئے50لاکھ،ہائیکورٹ ملتان بنچ میں ججز کی ذاتی سٹاف کیلئے گیسٹ ہاؤس کے ایڈیشنل بلاک کی تعمیر کیلئے ایک کروڑ74لاکھ14ہزار، (بقیہ نمبر47صفحہ12پر )

ہائیکورٹ ملتان بینچ میں لفٹ کی تعمیر کیلئے2کروڑ روپے ر کھے گئے ہیں۔ نئے ما لی سا ل2017-18 کے بجٹ میں صو بے بھر کی عدالتو ں کے لئے ایک ارب75کروڑ87لاکھ80ہزار روپے کی40سکیموں میں سے جنوبی پنجاب کیلئے صرف16کرڑ67لاکھ59 ہزار روپے کی12سکیمیں دی گئی ہیں اور کوئی نئی سکیم شامل نہیں ہے جو گزشتہ سال کے مقابلے میں کئی گنا کم ہیں،گزشتہ سال2016-17ء کے بجٹ صوبہ بھر کی عدالتوں کیلئے2ارب36کروڑ81 لاکھ93ہزار روپے کی68سکیموں میں سے جنوبی پنجاب کیلئے48کروڑ کی19سکیمیں دی گئی تھیں اور سال2015-16میں کل76سکیموں میں سے جنوبی پنجاب کی عدالتوں کی24سکیموں کیلئے43کروڑ32لاکھ 27ہزار رکھے گئے تھے اور کوئی نئی سکیم شامل نہیں تھی،نئے مالی سال2017-18ء کے بجٹ میں کل سکیموں میں سے جنوبی پنجاب کیلئے رکھی گئی جاری سکیموں میں جوڈیشل کمپلیکس ملتان کیلئے50لاکھ،ہائیکورٹ ملتان بنچ میں ججز کی ذاتی سٹاف کیلئے گیسٹ ہاؤس کے ایڈیشنل بلاک کی تعمیر کیلئے ایک کروڑ74لاکھ14ہزار، ہائیکورٹ ملتان بینچ میں لفٹ کی تعمیر کیلئے2کروڑ روپے،جوڈیشل کمپلیکس شجاع آباد میں غیر رہائشی بلاک کی تعمیر کیلئے5کروڑ70لاکھ18 ہزار،جوڈیشل کمپلیکس دنیا پور میں2سول عدالتوں کیلئے14لاکھ36ہزار اور ریکارڈ روم کی تعمیر کیلئے39لاکھ20ہزار، جوڈیشل کمپلیکس لودھراں میں عدالتوں کے لنک شیڈ کی تعمیر کیلئے 20لاکھ،جوڈیشل کمپلیکس کہروڑپکا میں ریکارڈ روم کی تعمیر کیلئے50لاکھ،فیملی کورٹ کمپلیکس وہاڑی میں2فیملی عدالتوں کیلئے ایک کروڑ20لاکھ،فیملی کورٹ کمپلیکس ڈی جی خان میں ایک فیملی عدالت کیلئے ایک لاکھ روپے،جوڈیشل کمپلیکس کوٹ ادو کیلئے3کروڑ32لاکھ29 ہزار،جوڈیشل کمپلیکس دریا خان کیلئے29لاکھ22ہزار اور بہاولنگر میں6سول عدالتوں کی تعمیر کے لئے11لاکھ20ہزار روپے رکھے گئے ہیں،دریں اثناء جوڈیشل کمپلیکسز اور ججز کی رہائش گاہوں کیلئے مرحلہ وار کم رقم رکھنے کی وجہ سے یہ منصوبے سالہا سال سے زیر التوا ہیں۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -