جے آئی ٹی کی تفتیش کے دوران حسین نواز کیلئے ایمبولینس کس نے بھجوائی؟ حکومتی وزیر نے ایسا دعویٰ کردیا کہ آپ بھی سر پکڑ لیں گے

جے آئی ٹی کی تفتیش کے دوران حسین نواز کیلئے ایمبولینس کس نے بھجوائی؟ حکومتی ...
جے آئی ٹی کی تفتیش کے دوران حسین نواز کیلئے ایمبولینس کس نے بھجوائی؟ حکومتی وزیر نے ایسا دعویٰ کردیا کہ آپ بھی سر پکڑ لیں گے

  


اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان مسلم لیگ ن کے رہنماﺅں کی جانب سے بار بار یہ دعویٰ کیا جا رہا ہے کہ جے آئی ٹی کی تفتیش کے دوران حسین نواز کی طبیعت کی خرابی کا بہانہ بنا کر ایمبولینس منگوائی گئی تاکہ شریف خاندان کو ہراساں کیا جا سکے لیکن اب حکومتی وزیر نے اس بارے میں حیران کن موقف دے دیا ہے۔

وزیر مملکت برائے کیڈ طارق فضل چوہدری نے نجی ٹی وی دنیا نیوز کے پروگرام آن دی فرنٹ میں گفتگو کرتے ہوئے انکشاف کیا ہے کہ جے آئی ٹی کی تفتیش کے دوران ایمبولینس انہوں نے خود بھجوائی تھی ۔ انہوں نے کہا کہ ایمبولینس انہی کی وزارت کے ہسپتال پمز کی جانب سے بھجوائی گئی تھی ۔ یہ ایمبولینس اس لیے بھجوائی گئی تھی کیونکہ جے آئی ٹی کی تفتیش میں کافی تاخیر ہوگئی تھی اور انہیں اس بات کا خدشہ تھا کہ وہاں پر وی آئی پی لوگوں سمیت جے آئی ٹی میں موجود سینئر لوگ بھی ہیں اور کسی کا بھی بلڈ پریشر ڈاﺅن ہو سکتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پانچ ، چھ گھنٹے سے زیادہ کی تفتیش ہوئی تو ہم نے حفظ ما تقدم کے طور پر ایمبولینس بھجوائی ۔

طارق فضل چوہدری نے مزید کیا کہا؟ جاننے کیلئے ویڈیو دیکھیں

مزید : قومی