غیرقانونی تعمیرات کے خلاف سست آپریشن، ہائیکورٹ کااظہاربرہمی

غیرقانونی تعمیرات کے خلاف سست آپریشن، ہائیکورٹ کااظہاربرہمی

لاہور(نامہ نگارخصوصی) لاہور ہائیکورٹ نے اندرون شہرغیرقانونی تعمیرات کے خلاف آپریشن سست روی سے کرنے اوراندرون شہر 32سرکاری سکولوں میں سہولیات کی عدم دستیابی پراظہاربرہمی کرتے ہوئے ڈی جی والڈ سٹی کامران لاشاری اورڈسٹرکٹ ایجوکیشن آفیسرکو11جون کوطلب کرلیاہے۔جسٹس علی اکبرقریشی نے آصف علی مرزا کی درخواست پرسماعت کی ، عدالتی حکم کے باجود ڈی جی والڈ سٹی کامران لاشاری پیش نہ ہوئے ، عدالتی کمیشن نے عدالت میں اندرون شہر غیرقانونی تعمیرات کے خلاف کی گئی کارروائی کے بارے میں رپورٹ پیش کی۔کمیشن نے بتایا کہ اندرون شہر 40 غیرقانونی تعمیرات کی نشاندہی ہوئی ہے جن میں سے دوکو مسمارکردیاگیا ہے۔ کمیشن نے عدالت کو آگاہ کیا کہ اندرون شہر 32سکولوں میں سہولیات کا فقدان ہے۔عدالت نے ڈسٹرکٹ ایجوکیشن آفیسرکو حکم دیا کہ وہ عدالتی کمیشن کے ہمراہ ان سکولوں کادورہ کرکے 11جون کورپورٹ پیش کریں۔

عدالت نے غیرقانونی تعمیرات کے خلاف آپریشن تیز کرنے کاحکم دیتے ہوئے ڈی جی والڈ سٹی کو آئندہ سماعت پرذاتی حیثیت میں پیش ہونے کا حکم دے دیا ہے ۔

اظہاربرہمی

مزید : علاقائی