کوآپریٹو بینک کو کروڑوں کا نقصان پہنچانے والے دو افسروں کی ضمانت خارج

کوآپریٹو بینک کو کروڑوں کا نقصان پہنچانے والے دو افسروں کی ضمانت خارج

لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائیکورٹ نے پراونشل کوآپریٹو بینک کو 170ملین روپے کا نقصان پہنچانے والے دو افسروں کی ضمانت پر رہائی کی درخواستیں خارج کر دیں۔جسٹس علی باقرنجفی اور جسٹس طارق افتخاراحمد پر مشتمل دو رکنی بنچ نے سابق ایم ڈی پراونشل کوآپریٹو بینک لیاقت درانی اور چیف منیجر کریڈٹ محمد بوٹا ساجد کی ضمانت کی درخواستوں پر سماعت کی۔ملزموں کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ باقاعدہ منظوری اور قانونی تقاضے مکمل کرنے کے بعد بینک سے 170 ملین روپے ٹرسٹ انویسٹمنٹ بینک میں منتقل کئے، نیب نے ملزموں پر مالی مفاد حاصل کرنے کا جھوٹا الزام عائد کر کے گرفتار کر رکھا ہے اور ریفرنس میں تفتیش مکمل ہونے کے باوجود ملزموں کو جیل میں قید رکھا گیا ہے ،ملزموں کو ضمانت پر رہا کرنے کاحکم دیا جائے۔ سپیشل پراسیکیوٹرنیب زاہدمنہاس نے ملزموں کاریکارڈ پیش کرتے ہوئے ضمانت کی مخالفت کی اور دلائل دئے کہ نیب تفتیش میں دونوں ملزمان قصور وار ہیں اور ملزموں کی طرف 2012ء سے اب تک 170ملین روپے کی رقم واجب الادا ہے، سپیشل پراسکیوٹر نیب نے عدالت کو آگاہ کیا کہ ٹرسٹ انویسٹمنٹ بینک رجسٹرڈ نہیں ہے اور کم ترین ریٹ والے بینک میں اختیارات سے تجاوز کیاگیا،ملزموں کی ضمانت کی درخواستیں خارج کی جائیں۔

مزید : علاقائی