سی سی پی او لاہور شاندارکارکردگی پر شاباش کے مستحق

سی سی پی او لاہور شاندارکارکردگی پر شاباش کے مستحق
سی سی پی او لاہور شاندارکارکردگی پر شاباش کے مستحق

  



لاہور پولیس اس لحاظ سے خوش قسمت ہے کہ اس کی قیادت کا دل اپنے اہلکاروں کے ساتھ دھڑکتا ہے۔ دنیا بھر میں ہر اس فورس کو خوش قسمت اور کامیاب سمجھا جاتا ہے جس کے کمانڈر اپنے جوانوں کے مسائل کو ذاتی مسائل سمجھیں، شہدا کو اپنے شہید سمجھیں، ان کے لواحقین کو اپنے لوگ سمجھیں۔یہی وجہ ہے کہ فوج میں بھی جب کٹھن حالات کا سامنا ہو تو سپہ سالار اگلے مورچوں پر جا کر جوانوں کو یہ پیغام دیتے ہیں کہ وہ مشکل اور سخت حالات میں اپنے جوانوں کے ساتھ ہیں۔یہ کہا جا سکتا ہے کہ سی سی پی او ایڈیشنل آئی جی بی اے ناصر بھی اسی پالیسی پر کام کر رہے ہیں۔لاہورکے عوام کی خوش قسمتی ہے کہ انہیں سی سی پی او ایڈیشنل آئی جی بی اے ناصر جیسا فرض شناس اور ایماندار آفیسرنصیب ہواہے۔

جس کی سربراہی میں لاہور پولیس کی کارکردگی پر روزبروزمثبت اثرات مرتب ہورہے ہیں۔نہ صرف جرائم پیشہ عناصرکا کڑامحاسبہ کیاجارہاہے بلکہ محکمہ پولیس میں موجود کالی بھیڑوں کی بھی بھرپورحوصلہ شکنی کی جارہی ہے تاکہ انکو راہ راست پر لاکر پولیس ڈیپارٹمنٹ کوعوامی امنگوں کا حقیقی ترجمان بنایاجاسکے۔ رمضان المبارک میں جس تسلسل کے ساتھ مربوط سکیورٹی حصار میں شہریوں کو پر امن ماحول میں عبادات کا موقع ملا وہیں عید الفطر پر بھی شہری بھرپور احساس تحفظ کے ساتھ عید کی خوشیوں سے لطف اندوز ہوئے۔ لاہور پولیس کی انتھک محنت اور جذبہ فرض شناسی کے ساتھ ڈیوٹی کی وجہ سے کوئی ناخوشگوار واقعہ پیش نہیں آیا۔

آئی جی پنجاب کیپٹن(ر) عارف نواز خان کی ہدایت پر عید سے ایک روز قبل سی سی پی او لاہور بی اے ناصر خود اور لاہور پولیس کے تمام سینئر افسران ڈی ی آئی جی آپریشنز اشفاق خان،ایس پی اور ڈی ایس پی رینک کے افسران لاہور سمیت دیگر اضلاع میں شہداء لاہور پولیس کی رہائش گاہوں پر گئے اور وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار اورآئی جی پولیس کی جانب سے اہلخانہ میں پھولوں کے گلدستے، تحائف اور بچوں میں عیدی تقسیم کیں۔

عید الفطرکے موقع پر لاہور پولیس کی طرف سے سکیورٹی کے بہترین انتظامات دیکھنے میں آئے۔۔ عید الفطر کے دن ڈسٹرکٹ پولیس لائنز قلعہ گجر سنگھ میں وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار اور آئی جی پنجاب کیپٹن(ر) عارف نواز خان کے ہمراہ نماز عید کی ادائیگی کے بعد سی سی پی او لاہور بی اے ناصر اور ڈی آئی جی آپریشنز اشفاق خان سمیت لاہور پولیس کے اعلیٰ افسران پولیس جوانوں کے ساتھ عید کی خوشیوں میں شریک ہوئے۔سی سی پی او لاہور بی اے ناصر،ڈی آئی جی آپریشنز لاہور اشفاق خان اور دیگر اعلیٰ پولیس افسران نے پولیس لائنز میس میں لاہور پولیس کے افسران اور جوانوں کے ہمراہ بڑے کھانے میں شرکت کی۔

اعلیٰ پولیس افسران اینٹی رائٹ فورس، ڈولفن سکواڈ،پی آر یو اور ٹریفک سمیت لاہور پولیس کے تمام ونگز کے جوانوں میں گھل مل گئے اور ان کے ہمراہ کھانا کھایا۔سی سی پی او لاہور بی اے ناصر اور ڈی آئی جی آپریشنز اشفاق خان نے پولیس لائنز قلعہ گجر سنگھ کے درجہ چہارم کے ملازمین اور پولیس بینڈ کے ارکان میں عیدی بھی تقسیم کی۔عید کی صبح سی سی پی او کی نگرانی میں ایس ایس پی آپریشنز لاہوراسماعیل الرحمٰن کھاڑک سمیت تمام ایس پیز،ڈی ایس پیز اور دیگر افسران نے لاہور کی مساجد میں نماز عید کے لئے سکیورٹی انتظامات کی چیکنگ کی۔ نماز عید پربھی سی سی پی او بی اے ناصر لاہور پولیس کی طرف سے کیے گئے سکیورٹی انتظامات کا خود جائزہ لیتے رہے۔

عیدالفطر کی تعطیلات کے دوران شدید گرمی کے باوجود بچوں اور خواتین سمیت ہر عمر کے شہریوں کا پارکس،تفریح گاہوں اور ریستورانٹس میں رش دیکھنے میں آیا۔ لاہور پولیس کے جوان عید کے موقع پر اپنوں سے دور ہونے کے باوجود فرض کے جذبہ سے سرشار ہوکرعید منانے والے اہلیان لاہور کوبھرپور تحفظ فراہم کر نے میں مصروف رہے۔ عید کے موقع پر لاہور پولیس کے پارکوں، تفریح گاہوں اور دیگر پبلک مقامات کی سکیورٹی کے لئے سخت انتظامات کئے گئے تھے۔سی سی پی او بی اے ناصرعید کی تمام تعطیلات میں باقاعدگی سے روزانہ پارکوں،تفریح گاہوں اور پبلک مقامات کے سکیورٹی انتظامات کا خود جائزہ لیتے رہے۔

ان کا کہنا تھا کہ شہریوں کا احساس تحفظ کے ساتھ عید کی خوشیوں سے بھرپور لطف اندوز ہونا ہی ہمارے لئے عید کی خوشی اور اعزاز کی بات ہے۔سی سی پی اونے ڈی آئی جی آپریشن، ایس ایس پی اور شہریوں کی سکیورٹی چیکنگ پر تعینات پولیس کے جوانوں کی بھرپور حوصلہ افزائی کی اور انہیں مزید الرٹ ہو کر ڈیوٹی دینے کی ہدایت کی۔سی سی پی اولاہورڈیوٹی پر تعینات پولیس افسران اور اہلکاروں کو ضروری ہدایات و شاباش دیتے اور حوصلہ افزائی کرتے نظر آئے۔اپنے کمانڈر کو عملی طور پر سکیورٹی ڈیوٹی میں حصہ لیتے دیکھ کر پولیس فورس کا مورال بلندرہا۔پولیس افسران و اہلکاروں نے اپنے گھروالوں کے ساتھ عید منانے کی بجائے چھٹی کے چار یوم شہریوں کی حفاظت پر مامور ہوکر خدمت میں گزارے۔

تاریخ عالم گواہ ہے کہ جن لوگوں کی شمشریں زنگ آلود ہوگئیں اور جن کی انگلیاں طاوئس ورباب کے تاروں پر رقص کرنے لگیں وہ لوگ دولت عزت متاع غیرت اور شہرت سے محروم ہوگئے اور جن لوگوں نے خاص عہدوں پر رہ کراپنے فرائض خوش اسلوبی،ایمانداری اور فرض شناسی سے سرانجام دیتے ہوئے اپنے ضمیر کی آواز کوسنااور حق وسچ کی صداپر بلاخوف وخطر لبیک کہا وہ لوگ اللہ کے فضل وکرم سے دنیاکے ہرمیدان میں فتح یاب اور سرخروہوئے محکمہ پولیس سے وابستہ اعلیٰ افسران (آئی جی پولیس) سے لیکرکانسٹیبل تک تمام عہدیداران اگر اپنے فرائض ایمانداری اور خلوص نیت سے انجام دیں توکوئی وجہ ایسی نہیں کہ معاشر ے سے جرائم کی بیخ کنی ہونے سے ایک مثالی،خوشگواراور پرامن ماحول کا قیام عمل میں نہ لایا جاسکے۔،کسی بھی نظام کے بگاڑ یا سدھار کے ذمے دار اس کے اوپر والے اور کرتا دھرتا ہوتے ہیں۔

یہ کہنا ہرگز غلط نہ ہوگا کہ ہمارے ہاں، محنتی و مثبت سوچ کے حامل قابل اور ایماندار اعلیٰ افسران بہت کم ہیں جو کڑے احتساب کا نظام رائج کرکے نچلی سطح کے کرپٹ اور غیر انسانی کرداروں کو راہ راست پر لا سکیں۔ ایسے ہی ہمیں محکمہ پولیس کو اپنا سمجھنا چاہئے اور عوام کے جان و مال کے تحفظ کی خاطر اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کرنے والے بہادر سپاہ کے بہادر سپاہیوں کو خراجِ تحسین پیش کرنا چاہیے۔ پنجاب حکومت کو چاہیے کے پولیس کے لیے سالانہ ایوارڈ کی تقریب کا انعقاد کرے اور ان کو تمغہ امتیاز، تمغہ جرات اور شہید کے لیے تمغہ حیدر دے تاکہ اس فورس کا بھی مورال بلند ہو سکے۔

مزید : رائے /کالم


loading...