تاجر برادری کا پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے پر شدید ما یوسی کا اظہار

تاجر برادری کا پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے پر شدید ما یوسی کا اظہار

  



کراچی(اکنامک رپورٹر)تاجروصنعت کار برادی نے حکومت کی جانب سے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے پر شدید مایوسی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس اقدام کے نتیجے میں نہ صرف مہنگائی میں اضافہ ہوگا بلکہ صنعتوں کی پیداواری لاگت بڑھنے سے مقامی پیداوار و بر آمدات میں بھی کمی واقع ہوگی۔آل پاکستان فروٹ اینڈ ویجیٹیبل امپورٹرز اینڈ ایکسپورٹرز ایسوسی ایشن کے سرپرست و ایف پی سی سی آئی کے سابق نائب صدر وحید احمد نے کہا کہ پاکستان میں مقامی صنعتوں کی پیداواری لاگت پہلے ہی خطے میں سب سے زیادہ ہے اور اب پٹرولیم مصنوعات کے نرخوں میں مزید اضافے سے معاشی سرگرمیاں سست روی کا شکار ہوجائیں گی جبکہ بر آمدی صنعتوں کیلئے پیداواری لاگت میں اضافے کے باعث عالمی مارکیٹ میں دیگر ممالک سے مسابقت مزید مشکل ہوجائیگی۔ وحید احمدنے کہا کہ پاکستان سے کینو اور آم کی بر آمدات اضافے کی جانب گامزن تھیں،تاہم اب پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کے نتیجے میں باغات سے پورٹ تک کینو اور آم کے ترسیل کے اخراجات بڑھ جائینگے اور بر آمد کنندگان کیلئے مشکلات پیدا ہونگی۔پاکستان ایسوسی ایشن آف آٹو موٹیو پارٹس اینڈ ایسیسریز مینو فیکچررز(پاپام)کے سابق چیئرمین مشہود علی خان نے بھی پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے پر شدید مایوسی کا اظہار کرتے ہوئے کہا اس اقدام کے نتیجے میں ملک بھر میں مہنگائی کی نئی لہر کا خدشہ ہے جبکہ اطلاعات ہیں کہ آئی ایم ایف نے بجلی اور گیس کے نرخوں میں بھی اضافے کا مطالبہ کیا ہوا ہے۔ مشہود علی خان کا کہنا تھا کہ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے سے معاشی سرگرمیاں یقینی طور پر متاثر ہونگی،شرح سود میں اضافے اور اب پٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں بڑھنے سے صنعتوں اور مینو فیکچررز کیلئے پیداوار میں اضافہ کرنا ممکن نہ رہے گا،اگر صنعتوں کا پہیہ رکا تو ملک میں بیروزگاری کا عفریت جنم لے سکتا ہے،حکومت کو چاہیئے کہ روزگار کے نئے مواقع پیدا کرنے کیلئے صنعتوں کو ریلیف فراہم کرے، پیداواری لاگت کو سستا کیا جائے تا کہ نہ صرف روزگار کے مواقع پیدا ہوسکیں بلکہ ملکی بر آمدات میں بھی اضافہ کیا جاسکے،آل کراچی تاجر اتحاد کے چیئرمین عتیق میر نے کہاکہ رمضان المبارک سے قبل ہی عوام پر پٹرول بم گرا دیا گیا۔

،عوام پہلے ہی مہنگائی کے ہاتھوں پریشان ہیں اور ان کی قوت خرید دم توڑ چکی ہے،بازاروں میں خریداری نہ ہونے کے برابر ہے،تاجر اور عوام دونوں ہی بجلی،گیس اور پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے سے مشکلات کا شکار ہیں،ہم سمجھتے ہیں کہ اس اقدام سے مہنگائی کی شدت میں اضافہ ہوگا جس سے یقینی طور پر معاشی سرگرمیوں کی رفتار دھیمی پڑجائیگی۔

 چ

مزید : علاقائی


loading...