شمالی وزیر ستان میں فوجی گاڑی بارودی سرنگ سے ٹکرا گئی، لیفٹیننٹ کرنل، میجر، کیپٹن اور حوالدا ر شہید 

شمالی وزیر ستان میں فوجی گاڑی بارودی سرنگ سے ٹکرا گئی، لیفٹیننٹ کرنل، میجر، ...

  



اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک، نیوز ایجنسیاں)  شمالی وزیرستان کے علاقہ خار کمر میں دہشتگردوں  کے فوجی گاڑی  پرحملے میں 3 افسران اور ایک فوجی اہلکار  شہید جبکہ 4 فوجی اہلکار زخمی ہو گئے۔ پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق جمعہ کو شمالی وزیرستان کے علاقہ خاڑ کمر میں دہشتگردوں نے سڑک پر نصب آئی ای ڈی کے ذریعے فوجی گاڑی کو نشانہ بنایا جس کے نتیجے میں 3 افسران اور ایک فوجی اہلکار جام شہادت نوش کر گئے جب کہ 4 فوجی اہلکار زخمی ہو گئے۔ شہداء میں کریم آباد ہنزہ سے تعلق رکھنے والے لیفٹیننٹ کرنل راشد کریم بیگ، کراچی کے میجر معیز مقصود بیگ، لکی مروت سے تعلق رکھنے والے کیپٹن عارف اللہ اور چکوال سے تعلق رکھنے والے حوالدار ظہیر شامل ہیں۔ آئی ایس پی آر کے مطابق یہ وہی علاقہ ہے جہاں سیکیورٹی فورسز نے  آپریشن کرکے چند سہولت کاروں کو گرفتار کیا تھا۔ گزشتہ ایک مہینے کے دوران دس سیکیورٹی اہلکاروں نے جام شہادت نوش کیا  جب کہ جمعہ کے واقعہ سمیت 35 اہلکار زخمی ہیں۔آئی ایس پی آر کے مطابق یہ واقعہ اسی علاقہ میں پیش آیا جہاں فورسز نے چند روز قبل کارروائی کر کے کچھ سہولت کاروں کو گرفتار کیا تھا۔ دہشت گردوں نے خر کمر میں بارودی سرنگ سڑک پر نصب کررکھی تھی۔ دریں اثناعید کی ڈیوٹی پر مامور ایف سی کی پٹرولنگ ٹیم پر دہشت گردوں کے حملہ میں 2ایف سی اہلکار شہید ہو گئے۔ پاک فوج کے محکمہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر)کی طرف سے جاری بیان کے مطابق شہید ہونیوالے جوانوں میں سپاہی یار محمد اور سپاہی مہتاب خان شامل ہیں۔ 23سالہ سپاہی یار محمد کا تعلق بلوچستان کے ضلع سبی کے علاقہ کچھ سے جبکہ 19سالہ مہتاب خان کا تعلق لکی مروت سے تھا۔ سکیورٹی فورسز نے علاقہ کو گھیرے میں لیکر سرچ آپریشن شروع کر دیا۔دریں اثنا صدر مملکت عارف علوی وزیر اعظم عمران خان دزیر داخلہ  بریگیڈیر (ر) اعجاز شاہ  سپیکر قومی اسمبلی اور وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے سانحہ وزیرستان میں پاک فوج کے 3 افسروں اور جوان کی شہادت پر افسوس کا اظہار کی ہے وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ  ہے کہ چند دشمن عناصر قبائلی علاقے کے غیور عوام کو ورغلا رہے ہیں،ریاست ان عناصر کو امن میں خلل ڈالنے کی اجازت نہیں دے سکتی۔ شمالی وزیر ستان میں خڑکمرمیں پاک فوج پر حملے کی مذمت کرتے ہوئے وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ خڑ کمر میں بارودی سرنگ کے دھماکے میں افسروں اور جوانوں کے شہید اور زخمی ہونے پر بہت افسوس ہے اور ان کے اہلخانہ کے ساتھ دلی ہمدردی ہے۔ وزیر اعظم نے کہا دہشتگردوں کے حملے میں زخمی ہونیوالے جوانوں کی جلد صحتیابی کیلئے دعا گوہوں۔ان کا کہنا تھا کہ کچھ دشمن عناصر قبائلی علاقے کے غیور عوام کوورغلا رہے ہیں لیکن ریاست نے ان عناصر کو امن و امان میں خلل ڈالنے کی اجازت نہیں دے سکتی، پوری قوم پا ک فوج کے پیچھے کھڑی ہے۔۔قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف اور مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف نے شمالی وزیرستان میں دھماکے سے شہادتوں پر اظہار رنج و غم کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ دہشت گردی کی شدید ترین الفاظ میں مذمت کرتے ہیں۔شہباز شریف نے کہا کہ دشمن پاکستان کا امن تباہ کرنے کے درپے ہیں لیکن دہشت گرد اپنے مذموم حملوں سے پاکستان کا عزم کمزور نہیں کر سکتے۔انہوں نے مزید کہا کہ پوری قوم شہداء  کے خون کی قرض دار ہے اور شہدائکی عظیم قربانیاں سنہری حروف سے لکھی جائیں گی۔۔وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا محمود خان نے بھی شمالی وزیرستان میں بارودی سرنگ کے دھماکے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ حملے میں فوجی جوانوں کی شہادتوں پر انتہائی دکھ ہے۔محمود خان نے کہا کہ شہیدوں کا لہو کسی بھی صورت رائیگاں نہیں جانے دیں گے۔

دہشت گرد حملہ

مزید : صفحہ اول


loading...