ممتاز ادیب، ڈرامہ نگار اور اداکار ڈاکٹر انورسجاد سپرد خاک

ممتاز ادیب، ڈرامہ نگار اور اداکار ڈاکٹر انورسجاد سپرد خاک

  



لاہور(فلم رپورٹر)ممتاز ادیب، ڈرامہ نگار اور اداکار ڈاکٹر انورسجاد طویل علالت کے بعد انتقال کر گئے۔ انتقال کے وقت انور سجاد کی عمر 84 برس تھی، خدمات کے اعتراف میں انہیں صدارتی تمغہ حسن کارکردگی سے بھی نوازا گیا۔ڈاکٹر انور سجاد کی نماز جنازہ لاہور میں ادا کر دی گئی، مرحوم کی نمازِ جنازہ لیک سٹی میں ادا کی گئی جس میں سماجی،سیاسی اور ادبی شخصیات نے کثیر تعداد میں شرکت کی.ان کی اہلیہ کا کہنا ہے کہ ڈاکٹر انور سجاد کئی ہفتوں سے علیل تھے، کھانا پینا بھی چھوڑ رکھا تھا۔ ڈاکٹر انور سجاد نے سوگواروں میں اہلیہ اور ایک بیٹی چھوڑی ہے۔انور سجاد پیشے کے اعتبار سے میڈیکل ڈاکٹر تھے۔ مرحوم کے والد کا شمار بھی اپنے وقت کے مشہور ڈاکٹرز میں کیا جاتا تھا۔ان کی وجہ شہرت ڈراموں میں جاندار اداکاری، افسانہ نگاری اور ڈرامہ نویسی بنی۔ڈاکٹر انور سجاد نے کنگ ایڈورڈ میڈیکل کالج سیایم بی بی ایس کیا۔ ان کا پہلا ناول‘رگ سنگ’1955ء میں شائع ہوا، ان کی دیگر کتابوں میں استعارے، آج، پہلی کہانیاں، چوراہا، خوشیوں کا باغ اور دیگر شامل ہیں۔ڈاکٹر انور سجاد کی دیگرتصانیف میں زرد کونپل، نگار خانہ، صبا، سمندر، جنم روپ، نیلی نوٹ بْک، رسی کی زنجیر و دیگر شامل ہیں۔

ڈاکٹر انورسجاد

مزید : صفحہ اول


loading...