جسٹس مامون رشید شیخ کاکیمپ جیل کا دورہ،9قیدی رہا

جسٹس مامون رشید شیخ کاکیمپ جیل کا دورہ،9قیدی رہا

  



لاہور(نامہ نگارخصوصی)لاہور ہائی کورٹ کے سینئر ترین جج مسٹر جسٹس مامون رشید شیخ نے کہا ہے کہ جرائم کی ایک بڑی وجہ بیروزگاری ہے، اگر لوگوں کو مناسب روزگار دستیاب ہوں تو جرائم کی شرح میں خاطر خواہ کمی آئے گی،کوئی بھی انسان جرم کرتا ہے تو بلاتفریق اس کے جرم کے مطابق سزا ضروری ہے لیکن کسی کو غلطی سے زیادہ سزا نہیں دی جانی چاہیے۔ان خیالات کاا ظہار انہوں نے عید الفطرکے موقع پر کیمپ جیل کا دورہ کے دوران کیا،فاضل جج نے عید کا روز قیدیوں کے ساتھ جیل میں گزارا،انہوں نے عید ملنے کے علاوہ قیدیوں کو تحائف بھی دیئے، فاضل جج نے جیل کے ہسپتال سمیت دیگر مختلف حصوں کا دورہ کیا اور قیدیوں کو دستیاب سہولیات کا جائزہ لیا،مسٹر جسٹس مامون رشید شیخ نے معمولی جرائم میں قید 9 قیدیوں کی رہائی کا حکم بھی دیا،فاضل جج بچوں کی بیرک میں جا کربچوں کے ساتھ گھل مل گئے۔ انہوں نے کہا کہ بچے ہمارا مستقبل ہیں،جیل میں بھی ان کی تربیت کا خاص خیال رکھا جانا ضروری ہے، جیل میں قید انسان اپنے پیاروں سے دور عید منانے پر مجبور ہیں، ان کے اس غم کو کم کرنے کے لئے ہم ان کے ساتھ عیدمنانے آئے ہیں، فاضل جج کے حکم پر معمولی جرائم میں ملوث 9قیدیوں کو رہا کیا گیا تاکہ وہ اپنے پیاروں کے ہمراہ عید کی خوشیاں منا سکیں۔ فاضل جج نے جیل میں قیدیوں کیلئے دستیاب سہولیات پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے جیل انتظامیہ کی خدمات کو سراہا۔اس موقع پر ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن جج لاہور قیصر نذیر بٹ بھی ان کے کے ہمراہ تھے، ڈی آئی جی جیل خانہ جات ملک مبشر اور دیگر جیل حکام نے فاضل جج کا استقبال کیا اور چاق وچوبند دستے کی جانب سے انہیں گارڈ آف آنر پیش کیا گیا، فاضل جج نے کہا کہ سزا اور جزا کا نظریہ اپنی جگہ لیکن قیدیوں کی کونسلنگ بھی ہونی چاہیے تاکہ وہ جیل سے باہر آکراچھے شہریوں کی طرح معاشرے میں اپنا کردار اداکرسکیں۔

9قیدی رہا

مزید : صفحہ آخر


loading...