عید ملاقاتیں ، ہوٹلوں پردعوتیں ، پارک شہریوں سے فل، ٹریفک جام

عید ملاقاتیں ، ہوٹلوں پردعوتیں ، پارک شہریوں سے فل، ٹریفک جام

  



ملتان ( سٹی رپورٹر) عیدالفطر کے پہلے روز شدےد گرمی کے باعث بازاروں‘ پارکوں‘ ہوٹلز پر شہرےوں کا رش معمولی رہا۔ لوگوں کی بڑی تعداد گرمی کی شدت مےں اضافے اور لوڈشےڈنگ نہ ہونے کے باعث گھروں مےں بےٹھ کر چھٹی انجوائے کرتی رہی۔ لوگ اےک دوسرے کو مبارک باد دےنے محلے داروں(بقیہ نمبر32صفحہ7پر )

اور رشتے داروں کے گھروںمےں گئے اور دوپہر سے قبل ہی ملاقاتوں کا سلسلہ ختم کرکے گھروں مےں مقےد ہو کر بےٹھ گئے۔ عید کا مزہ دوبالا کرنے کے لئے خواتین کی جانب سے بھی گھروں میں مزے مزے کے پکوانوں کا انتظام کیا گیا ہے۔گرمی کی شدت کے باعث عےد الفطر کے پہلے دو روز پارکوں‘ہوٹلوں‘ رےسٹورنٹ اور دےگر تفرےحی مقامات پر لوگوں کا رش انتہائی معمولی رہا تاہم شام کے اوقات میں موسم خوشگوار ہونے کے باعث لوگوں کی بڑی تعداد گھروں سے نکل کر تفرےحی مقامات پر پہنچ گئی۔ رش کے باعث شہر کے اکثر مقامات پر ٹرےفک بھی جام رہی لوگ فٹ پاتھوں‘ گلےوں ‘بازاروں مےں سے گزر کر منزلوں پر پہنچتے رہے ۔جبکہ ٹرےفک پولےس کی جانب سے بھی چالانوں پر پابندی کے باعث اےک اےک موٹرسائےکل پر چار چار افراد بےٹھ کر سفر کرتے رہے۔جبکہ عیدالفطر کے موقع پر دکانوں اور بیکریوں پر خریداروں کا رش رہا جس کا فائدہ اٹھاتے ہوئے انہوں نے منہ مانگے دام وصول کئے۔ عیدکے موقع پر عزیز و اقارب سے ملنے جانے والے اپنے پیاروں کیلئے کیک، مٹھائیاں، پھول اور گلدستے ساتھ لے کر جاتے ہیں۔ اس موقع پر فائدہ اٹھاتے ہوئے جہاں کیک، پیسٹری اور مٹھائی کے کاریگروں اور مالکان کی چاندی رہی وہاں گل فروشوں نے منہ مانگے دام وصول کئے۔ عام دنوں میں 150 سے 200 روپے فروخت ہونے والا گلدستہ 300 روپے سے 500روپے میں فروخت ہوا جبکہ اپنے پیاروں کی قبروں پر ڈالی جانے والی پھولوں کی پتیاں اور چادریں بھی مہنگے داموں فروخت ہوتی رہیں۔

دعوتیں

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...