کیا واقعی قومی بیٹنگ کوچ گرانٹ فلاور اپنی ملازمت چھوڑ کر گرین شرٹس کو خیرباد کہنے جارہے ہیں؟ خود ہی واضح اعلان کردیا

کیا واقعی قومی بیٹنگ کوچ گرانٹ فلاور اپنی ملازمت چھوڑ کر گرین شرٹس کو خیرباد ...
کیا واقعی قومی بیٹنگ کوچ گرانٹ فلاور اپنی ملازمت چھوڑ کر گرین شرٹس کو خیرباد کہنے جارہے ہیں؟ خود ہی واضح اعلان کردیا

  



برسٹل (ویب ڈیسک) قومی بیٹنگ کوچ گرانٹ فلاور نے پاکستانی کرکٹ ٹیم کو چھوڑنے کی خبروں کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ ورلڈ کپ کے بعد بھی ذمہ داریاں بدستور نبھانے کی خواہش رکھتا ہوں لیکن اس کا انحصار حاصل شدہ نتائج پر ہے اور انہیں اس بات کا کوئی علم نہیں کہ ان کے عہدہ چھوڑ جانے کی جعلی خبر کہاں سے سامنے آئی کیونکہ یہ ان کی ذاتی چوائس ہرگز نہیں  ۔

روزنامہ دنیا کے مطابق گرانٹ فلاور کا کہنا تھا کہ یہ ان کا اپنے عہدے پر پانچواں سال ہے اور پاکستانی ٹیم کی کارکردگی میں اچھے یا برے دن کے علاوہ عدم تسلسل کا بھی ہاتھ ہے کیونکہ ویسٹ انڈیز کیخلاف پلیئرز کنڈیشنز سے ہم آہنگ نہیں ہو سکے اور تیکنیکی طور پر اس روز بہت برے ثابت ہوئے جس میں ورلڈ کپ کے پہلے میچ کا دباؤ اور گھبراہٹ بھی تھی البتہ انہوں نے انگلینڈ کیخلاف اپنی حقیقی صلاحیت کے مطابق کھیل پیش کیا جو ان کے کردار کا اصل عکس بھی ہے ۔ان کا کہنا تھا کہ بیٹسمینوں کی جانب سے رنز اسکورنگ کی ذمہ داری ان پر عائد ہوتی ہے جس کیلئے وہ تمام پلیئرز کو سخت محنت کی تلقین کرتے رہتے ہیں لیکن تین سو یا تین سو پچاس رنز کے بعد بالرز اور فیلڈرز کا بھی فرض ہوتا ہے کہ وہ اپنے ہدف کا دفاع کریں لیکن بدقسمتی سے انگلینڈ کیخلاف باہمی سیریز میں ایسا نہیں ہو سکا۔

قومی بیٹنگ کوچ کا کہنا تھا کہ بابر اعظم نے اس مقام تک رسائی کیلئے لمبا سفر طے کیا ہے اور ان کا کھیل ہی نہیں بلکہ اسٹرائیک ریٹ بھی بدستور بہتری کی جانب گامزن ہے جس میں وقت کے ساتھ مزید بہتری پیدا ہوگی لیکن وہ اپنی بیٹنگ کے عروج کے قریب ہیں اور دنیا کے بہترین بیٹسمینوں میں سے ایک بننے جا رہے ہیں۔عالمی کپ سے متعلق گرانٹ فلاور کا کہنا تھا کہ اس ٹورنامنٹ کا ہر میچ اہمیت کا حامل اور مشکل ہوتا ہے جس کو دیکھنا لطف کا باعث ہوتا ہے اور شائقین اس کا بھرپور مزہ لیتے ہیں۔

مزید : کھیل


loading...