اب آپ سیر کرنے خلاءمیں بھی جا سکتے ہیں، اعلان ہو گیا، طریقہ جانیے

اب آپ سیر کرنے خلاءمیں بھی جا سکتے ہیں، اعلان ہو گیا، طریقہ جانیے
اب آپ سیر کرنے خلاءمیں بھی جا سکتے ہیں، اعلان ہو گیا، طریقہ جانیے

  



نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) خلاءمیں جانے کا شوق بہت سوں کو ہو گا مگر انہیں خلاءمیں لیجانے کا کوئی انتظام موجود نہیں تھا۔ اب ایسے لوگوں کے لیے خوشخبری آ گئی ہے کہ امریکہ کے خلائی تحقیقاتی ادارے ناسا نے لوگوں کو خلاءکی سیر پر لیجانے کی تاریخ بتا دی ہے۔ میل آن لائن کے مطابق ناسا کی طرف سے اعلان کیا گیا ہے کہ وہ 2020ءکے لوگوں کو سیاحت کی غرض سے بین الاقوامی خلائی سٹیشن پر لیجانے کی سروس شروع کر رہا ہے۔ یہ سروس شروع ہونے کے بعد لوگ سیاحت کے لیے خلاءمیں جا سکیں گے اور وہاں 30دن تک قیام کر سکیں گے۔

خلاءمیں جانے کے شوقین افراد کے لیے یہ خوشخبری تو آ گئی ہے لیکن ان کا یہ شوق اتنا مہنگا پورا ہوگا کہ خلاءمیں یہ 30دن گزارنے کا خرچ سن کر شاید بہت سوں کی خوشی غارت ہو جائے۔ ناسا کی طرف سے بتایا گیا ہے کہ ایک سیاح کے لیے اس سفر کے خرچ کا تخمینہ 1کروڑ ڈالر (تقریباً 15کروڑ 70لاکھ روپے) لگایا گیا ہے۔ سیاحوں کو یہ سفر کم از کم 35ہزار ڈالر فی رات میں پڑے گا۔ لوگوں کو سیاحت کے لیے خلائی سٹیشن تک لیجانے کے لیے ناسا کے کمرشل کریو پروگرام کے ذریعے طیارے کیا جانے والا کرافٹ استعمال کیا جائے گا۔ اس کے علاوہ اس سفر میں سپیس ایکس کا ’کریو ڈریگن موجول اور بوئنگ کا سی ایس ٹی 100سٹارلائنر بھی استعمال کیے جائیں گے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...