سعودی عرب نے چین کے ساتھ مل کر کون سا خطرناک ترین ہتھیار بنا لیا؟ ایسا انکشاف کہ امریکہ بھی شدید پریشان ہو گیا

سعودی عرب نے چین کے ساتھ مل کر کون سا خطرناک ترین ہتھیار بنا لیا؟ ایسا انکشاف ...
سعودی عرب نے چین کے ساتھ مل کر کون سا خطرناک ترین ہتھیار بنا لیا؟ ایسا انکشاف کہ امریکہ بھی شدید پریشان ہو گیا

  


واشنگٹن(مانیٹرنگ ڈیسک) دیگر حریف ممالک کی طرح ایران اور سعودی عرب کے درمیان بھی ہتھیاروں کی دوڑ جاری ہے اور اب اس حوالے سے ایسا انکشاف منظرعام پر آ گیا ہے کہ امریکہ بھی پریشان رہ گیا۔ ڈیلی سٹار کے مطابق امریکہ خفیہ ایجنسی نے ہی یہ انکشاف کیا ہے کہ سعودی عرب نے چین کی مدد سے ایک خفیہ بیلسٹک میزائل تیار کر لیا ہے۔ سعودی عرب طویل عرصے سے اپنے قریبی اتحادیوں امریکہ اور برطانیہ سے بیلسٹک میزائل خریدنے کی کوشش کر رہا تھا تاہم دونوں ممالک نے اس کی ایران کے ساتھ مخاصمت کی وجہ سے اسے یہ میزائل فروخت کرنے سے انکار کر دیا تاہم اب اس نے چین کی مدد سے خود یہ ہتھیار بنا لیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق امریکی انٹیلی جنس حکام نے سینیٹرز کو بریفنگ دیتے ہوئے بتایا ہے کہ ”سعودی عرب اپنے مغربی اتحادی ممالک کو پس پشت ڈال کر جدید اور خطرناک ہتھیار تیار کرنے کی تگ و دو کر رہا ہے اور اس سلسلے میں اسے چین کی مدد حاصل ہے۔ ہمارے پاس اس بات کے ثبوت ہیں کہ سعودی عرب ایک میزائل ڈویلپمنٹ سنٹر پر بیلسٹک میزائل تیار کر رہا ہے اور یہ سنٹر چینی سائنسدانوں نے تیار کیا ہے۔ “ اس معاملے پر چینی وزارت خارجہ کی طرف سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ ”چین اور سعودی عرب کے وسیع تر تژویراتی تعلقات ہیں اور دونوں ممالک ہتھیاروں کی فروت سمیت تمام شعبوں میں ایک دوسرے کے ساتھ تعاون کر رہے ہیں۔ دونوں ملکوں کا یہ تعاون کسی بین الاقوامی قانون کی خلاف ورزی نہیں ہے اور نہ ہی یہ خطرناک ہتھیاروں کے پھیلاﺅ کے زمرے میں آتا ہے۔“

مزید : بین الاقوامی /عرب دنیا