سندھ حکومت خلوتوں میں کچھ اور جلوتوں میں کچھ اور کہتی ہے،اجمل و زیر

  سندھ حکومت خلوتوں میں کچھ اور جلوتوں میں کچھ اور کہتی ہے،اجمل و زیر

  

پشاور(این این آئی)وزیر اعلیٰ خیبر پختونخوا کے مشیر برائے اطلاعات و تعلقاتِ عامہ اجمل خان وزیر نے کہا ہے کہ سندھ حکومت خلوتوں میں کچھ اور جلوتوں میں کچھ اور کہتی ہے، وزیر اعظم عمران خان کی قیادت میں قومی رابطہ کمیٹی اجلاس میں سب سے زیادہ وقت وزیراعلیٰ سندھ کو دیا جاتا ہے جسکا میں خود اور چاروں صوبوں کے وزرائے اعلیٰ سمیت آزاد کشمیر کے وزیراعظم بھی گواہ ہیں لیکن انکی منطق سمجھ نہیں آتی کہ باہر آکر یہ کیوں بے جا تنقید شروع کردیتے ہیں سول سیکرٹریٹ اطلاع سیل میں میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ بلاول زرداری سندھ پر توجہ دے خیبر پختونخوا میں کرونا صورتحال قابو میں ہے اور کورونا سے صحتیابی کی شرح سندھ سے کافی بہتر ہے۔ خیبر پختونخوا میں عالمی ادارہ صحت کی گائیڈ لائنز کے مطابق کیسز کی رپورٹنگ ہورہی ہے۔ صوبے میں کورونا سے جاں بحق افراد کی میتیں اب لواحقین کو حوالہ کی جارہی ہیں۔ اجمل وزیر کا کہنا تھا کہ خیبر پختونخوا میں کورونا کیسز چھپائے نہیں جارہے ہیں ابتداء میں صوبے میں کورونا کی ٹیسٹنگ تعداد صرف 20 تھی جو اب تقریبا 2800 تک پہنچائی گئی ہے۔ اجمل وزیر نے ہسپتالوں کو حفاظتی سامان کی فراہمی کے بارے میں کہا کہ صوبہ بھر کے 49 ہسپتالوں کے طبی عملے کو کورونا وائرس سے نمٹنے کیلئے حفاظتی سامان کی ساتویں کھیپ مہیاکر دی ہے مجموعی طور پر صوبائی حکومت 12 لاکھ 39 ہزار فیس ماسک، 1 لاکھ 90 ہزار دستانے، 16325 حفاظتی کٹس، 159302 حفاظتی سوٹ، 85 ہزار این 95 ماسک سمیت دیگر ضروری سامان متعلقہ اداروں کو بھیج چکی ہے۔ مشیر اطلاعات نے مزید کہا کہ صوبے میں آٹے کی مصنوعی قلت پیدا کرنے والوں کے خلاف ضلعی انتظامیہ ایکشن میں ہے۔۔مقررہ نرخ سے زیادہ ریٹ پر آٹا فروخت کرنے والوں کے خلاف انتظامیہ اور محکمہ خواراک دونوں کا کریک ڈاؤن جاری ہے۔ اجمل وزیر کا کہنا تھا کہ پٹرول کی مصنوعی قلت اور ایس او پیز پر عمل درآمد نہ کرنے والوں کے خلاف بھی صوبہ بھر میں کاروائیاں جاری ہیں۔ انہوں نے انسداد ٹڈی دل کے لیے حکومتی اقدامات کے بارے میں کہا کہ صوبے میں ٹڈی دل کے خاتمے کے لئے محکمہ زراعت،ریلیف اورضلعی انتظامیہ ایکشن میں ہے۔ اوورسیز پاکستانیوں کی وطن واپسی کے بارے میں انہوں نے کہا کہ باچا خان انٹر نیشنل ائیرپورٹ سے اوورسیز کی آمد کا سلسلہ جاری ہے۔یکم فروری سے 20 مارچ تک 478 ریگولر پروازوں کے ذریعے 81524 مسافر پشاور ائیرپورٹ پر پہنچے تھے جن کی اسکریننگ کی گئی ہے جبکہ 15 اپریل سے 28 مئی تک 23 خصوصی پروازوں کے ذریعے کل 4675 مسافر پشاور ائیرپورٹ پہنچے ہیں۔اجمل وزیر نے مزید کہا کہ ایس او پیز کی خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف بھی کریک ڈاؤن جاری ہے۔

اجمل

مزید :

علاقائی -