پشاور سمیت صوبے بھر میں ڈالر کے ذخیرہ اندوزوں کا سراغ لگا لیا،ذرائع

    پشاور سمیت صوبے بھر میں ڈالر کے ذخیرہ اندوزوں کا سراغ لگا لیا،ذرائع

  

پشاور(آن لائن) پشاور سمیت صوبے بھر میں ڈالر کے ذخیرہ اندوزوں کا سراغ لگا لیا ہے یکم جنوری 2019سے لیکر اب تک اوپن مارکیٹ سے بھاری مالیت میں ڈالر خرید کر ذخیرہ اندوزوں کی نشاندہی فناشل مانیٹرنگ یونٹ " ایف ایم یو "نے کردی ہے انسداد سمگلنگ ترمیمی آرڈیننس سوئم کے تحت حکومت نے اس مافیا کے خلاف کاروائی کے اختیارات حاصل کر لئے ہیں صوبے میں ذخیرہ اندوزی میں ملوث افراد کو سرسری سماعت کے بعد پندرہ سال کی قید کی سزاء دی جا سکے گی۔ پشاور، چارسدہ، صوابی، بونیر، ضلع خیبر، مہمند، اورکزئی، ڈیرہ اسماعیل خان، بنوں، سمیت مختلف اضلاع میں شناختی کارڈ کی تفصیلات قانون نافذ کرنے والے اداروں کو بھی ارسال کی ہے۔ طلب اور رسد کے مطابق آزادانہ بنانے کے بعد پالیسی لاگو ہونے کے بعد کالا دھن رکھنے والی مافیا نے ناجائز فائدہ اٹھا کر اوپن مارکیٹ سے ڈالر خرید کر ذخیرہ اندوز کیا ہے۔ مافیا میں تاجر کے علاوہ بینکرز،بیگمات اور منی چینجرز عام ہیں۔ ذرائع نے بتایا ہے کہ سب سے زیادہ ذخیرہ اندوز کا تعلق پشاور سے دوسرے نمبر پر خیبر سے،تیسرے نمبر پر بونیر سے چوتھے نمبر پر صوابی سے ہے۔

ذخیرہ اندوزوں کا سراغ

مزید :

علاقائی -