فرانزک اوڈونٹولوجی طریقہ کار دنیا بھرمیں قابل قبول،ایس ایف ایم ٹی

  فرانزک اوڈونٹولوجی طریقہ کار دنیا بھرمیں قابل قبول،ایس ایف ایم ٹی

  

لاہور(خصوصی رپورٹ) کراچی طیارہ حادثہ کی تحقیقات کے سلسلے میں سامنے آنیوالے ڈاکٹر طاہر اشرف کے بیانات کو سوسائٹی آف فرانزک میڈیسن اینڈ ٹاکسیکولوجی پاکستان انتہائی تشویش کی نگاہ سے دیکھتی ہے اور ایسے بیانات کو متاثرہ خاندانوں کے لئے مزید تکلیف کا باعث سمجھتی ہے۔ فرانزک اوڈونٹولوجی کے تحت ہونے والی شناخت بین الاقوامی مجزہ قوانین کے عین مطابق ہے اور ساری دنیا میں قبول کی جاتی ہے اور اس طریقہ کار کو جھٹلانا طبی اخلاقیات کے منافی ہے۔ ڈاکٹر طاہر اشرف صاحب کا DNA کو سے افضل قرار دینا ہرگز قابل قبول نہیں۔ دونوں طریقہ کار کی اپنی حدود قیوم ہیں اور ان کے مضبوط اور کمزور نکات کے باعث ان کو ایک دوسرے سے برتر یا کم تر قرار نہیں دیا جاسکتا۔ فرانزک اوڈونٹولوجی ڈاکٹر ہمایوں تیمور بیگ نے اپنا کام انتہائی محنت، لگن اور جانفشانی سے انجام دیا ہے اور اپنی اس قومی خدمت کی ذمہ داری بھی لیتے ہیں۔ SFMT ڈاکٹر ہمایوں تیمور کے کام کو سراہتی ہے اور ان کی مہارت پہ کوئی شک نہیں رکھتی۔ SFMT کے تمام عہدیداران اور کل پاکستان ممبران ڈاکٹر طاہر اشرف کو صائب مشورہ دیتے ہیں کہ ہم سب کو اپنی حدود میں رہتے ہوئے اپنی ذمہ داریاں نبھانی چاہیں۔ دوسرے کے کام میں مداخلت متاثرہ خاندانوں کی تکالیف میں اضافہ کرے گی اور تلخیاں بڑھانے کا باعث بنے گی۔

قابل قبول

مزید :

صفحہ آخر -