پیپلز پارٹی نے رواں ہفتے ”ملٹی پارٹیز کانفرنس“ طلب کرنے کا اعلان کر دیا

پیپلز پارٹی نے رواں ہفتے ”ملٹی پارٹیز کانفرنس“ طلب کرنے کا اعلان کر دیا

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر) پاکستان پیپلز پارٹی سندھ نے 18ویں ترمیم پر حملے کی سازش، این ایف سی میں زیادتی، ٹڈی دل اور کورنا پر وفاق کے کردار ادا نہ کرنے پر کراچی میں رواں ھفتے ملٹی پارٹیز کانفرنس طلب کرنے کا اعلان کردیا ہے۔ نثار کھوڑو نے کہا ہے کے ملٹی پارٹیز کانفرنس رواں ہفتے کراچی میں ہوگی جس کے لئے ن لیگ، جماعت اسلامی، جے یوآئی، جے یوپی، اے این پی۔ نیشنل پارٹی، پختونخواہ عوامی ملی پارٹی سمیت دیگر سیاسی جماعتوں کے رھنماں سے رابطے کئے ہیں. جبکے قومپرست رھنماں ایاز لطیف پلیجو اور ڈاکٹر قادر مگسی سے بھی فون پر رابطہ کرکے ان کو بھی ملٹی پارٹیز کانفرنس کے لئے اعتماد میں لیا ہے۔ نثار کھوڑو نے کہا کہ سیاسی جماعتوں کے رہنماؤں اور قومپرست رہنماؤں کو کانفرنس میں شرکت کے لئے باضابطہ دعوت نامے بھی بھیجے جائینگے اورملٹی پارٹیز کانفرنس کے لئے دیگر جماعتوں سے بھی رابطے کئے جائینگے۔ ملٹی پارٹیز کانفرنس میں 18 ویں ترمیم، این ایف سی، ٹڈی دل کے حملوں سے فصلوں کی تباھی اور کورونا پر وفاق کے کردار ادا نہ کرنیپر مشترکہ بیانیہ اپنایا جائے گا۔ نثار کھوڑو نے کہا کے وفاقی حکومت کے پیٹ کا اصل درد 18ویں ترمیم اور این ایف سی ہے اس لئے سندھ پر حملے کئے جا رہے ہیں اور وفاق کو یہ بات کانٹا بن کر چھب رہی ہے کے این ایف سی میں صوبوں کا حصہ مرکز سے زیادہ کیوں ہے اس لئے وفاق کسی طرح این ایف سی میں صوبوں کا حصہ کم کرکے صوبوں کو معاشی طور پر کمزور کرنا چاھتا ہے۔ نثار کھوڑو نے کہا کے وفاقی حکومت مرکز کو قرضوں کی ادائگی کا جواز بنا کر صوبوں کے معاشی حقوق پر ڈاکہ ڈال کر وفاق کو مضبوط کرنا چاھتی ہے مگر سندھ کسی صورت این ایف سی میں کٹوتی والے ایسے کسی بھی فارمولے کو تسلیم نہیں کرے گی ان کا کہنا تھا کے آئینی طور پر قرضوں کی ادائگی اور میگا پراجیکٹس چلانا وفاقی حکومت کی ذمیداری ہے تو پہر صوبے اس مد میں وفاق کو این ایف سی کے اپنے حصے میں سے وفاق کو رقوم کیوں ادا کریں؟ نثار کھوڑو نے مزید کہا کے وفاق جب صوبوں سے سروسز اور گڈز کی مد میں ٹیکسز وصول کرتا ہے تو پہر این ایف سی میں صوبوں کے حصے سے کٹوتی صوبوں کے حق پر ڈاکہ ہوگا مگر سندھ کسی صورت این ایف سی میں اپنے حصے سے کٹوتی برداشت نہیں کرے گی۔ انہوں نے کہا کے وفاقی حکومت 18ویں ترمیم اور این ایف سی پر راگنی آلاپ کر اپنی ھر محاذ پر ہونے والی ناکامی پر پردہ ڈالنے چاھتی ہے۔ وفاق اگر قرضوں کی ادائگی میں ناکام ثابت ہوا ہے تو وفاق اپنی ناکامی صوبوں کو معاشی طور پر کمزور کرکے نہ چھپائے۔ نثار کھوڑو کا کہنا تھا کے پیپلز پارٹی 18 ویں ترمیم اور این ایف سی پر کوئی سمجھوتہ نہیں کرے گی۔انہوں نے کہا کے اگر کورونا کے پہلا کی روک تھام کے لئے سندھ کی تجاویز مانی جاتی تو آج کیسز اتنے نہیں بڑھتے۔ نثار کھوڑو نے مزیدکہا کے کانفرنس میں ان اشوز پر بات کرنے کے بعد مشترکہ لائحہ عمل اپنایا جائے گا۔۔

مزید :

صفحہ آخر -