نیوزی لینڈ کی وزیراعظم جیسنڈا آرڈرن خوشی سے جھوم اٹھیں، تھوڑا سا رقص کرنے کا بھی اعتراف مگر کیوں؟ شاندار وجہ آپ بھی جانئے

نیوزی لینڈ کی وزیراعظم جیسنڈا آرڈرن خوشی سے جھوم اٹھیں، تھوڑا سا رقص کرنے کا ...
نیوزی لینڈ کی وزیراعظم جیسنڈا آرڈرن خوشی سے جھوم اٹھیں، تھوڑا سا رقص کرنے کا بھی اعتراف مگر کیوں؟ شاندار وجہ آپ بھی جانئے

  

ویلنگسٹن(ڈیلی پاکستان آن لائن)نیوزی لینڈ میں کورونا وائرس کا آخری مریض بھی آج صحتیاب ہوکر گھر کو جاچکا جس کے بعد کیویز وزیر اعظم جیسنڈا آردرن نے ملک کے کورونا سے مکمل پاک ہونے کا اعلان کیا ہے۔

نیوزی لینڈ کی وزیر اعظم جیسنڈاآرڈرن نے ویلنگسٹن میں پریس کانفرنس کے دوران کورونا پر قابو پانے کااعلان کیا۔ اسی دوران ایک رپورٹر نے سوال کیا  کہ جب انہیں پتہ چلا کہ آخری مریض بھی صحتیاب ہوچکا ہے اور اب ملک میں کورونا وائرس سے متاثرہ ایک بھی شخص موجود نہیں ہے تو وہ خوشی سے جھوم اٹھیں۔انہوں نے کہا انہوں نے لاونج میں رقص کیااور وہ خوشی اور حیرت کے ملے جلے احساسات محسوس کررہی تھیں۔

رپورٹر نے یہی سوال نیوزی لینڈ کی محکمہ صحت کی ڈائریکٹر ڈاکٹر ایشلے بلوم فیلڈ سے کیا تو ان کا کہنا تھا کہ وہ وزیر اعظم کی طرح خوبصورت رقص نہیں کرسکتی جس پر سب مسکرا دیئے۔پریس کانفرنس میں جیسنڈا نے کہا کہ نیوزی لینڈرز اس وائرس کے خلاف متحد ہیں اور اس کا خاتمہ کرکے رہیں گے۔

وزیر اعظم جاسنڈا آرڈرن کا کہنا ہے کہ اس کے باوجود کے ملک میں کورونا وائرس سے متاثر کوئی شخص نہیں ہے مگر پھر پھر بھی ملکی سرحدیں بند ہی رہیں گی۔

ان کا کہنا ہے کہ اس وائرس کے خلاف ہماری سرحدیں اب ہمارا پہلا دفاع ہیں تاکہ ہم اس وائرس کو درآمد نہ کر سکیں۔

انھوں نے صاف الفاظ میں کہا کہ ہماری سرحدیں بند رہیں گی اور سرحدوں پر آئسولیشن کو یقینی بنایا جائےگا۔ ان کے مطابق وائرس کی روک تھام کے لیے یہ ایک انتہائی اہم قدم ہے۔

ان کے مطابق ہم اس صورتحال کو برقرار رکھنا چاہتے ہیں۔

اس وقت نیوزی لینڈ پڑوسی ملک آسٹریلیا کے ساتھ سرحدیں کھولنے سے متعلق مذاکرات کر رہا ہے، جہاں کورونا وائرس متاثرین کی بہت کم تعداد ہے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -بین الاقوامی -کورونا وائرس -