چیئرمین سینیٹ کیلئے جوڑ توڑ جاری ، سیاسی جماعتوں کے رابطے عروج پر

چیئرمین سینیٹ کیلئے جوڑ توڑ جاری ، سیاسی جماعتوں کے رابطے عروج پر
چیئرمین سینیٹ کیلئے جوڑ توڑ جاری ، سیاسی جماعتوں کے رابطے عروج پر

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک، آن لائن، آئی این پی ، اے این این )چیئرمین اور ڈپٹی چیئرمین سینیٹ کے انتخابات کے لئے جوڑ توڑ عروج پر پہنچ گیا ۔اس سلسلے میں گزشتہ روز پیپلزپارٹی کا اجلاس ہوا ۔ پیپلزپارٹی کی طرف سے چیئرمین سینیٹ کے متوقع امیدوار سینیٹر رضا ربانی نے گزشتہ روز قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر خورشید شاہ سے ملاقات کی اور چیئرمین سینیٹ کے انتخابات کے حوالے سے مشاورت کی ۔فیصلہ کیا گیا کہ پیپلزپارٹی رضا ربانی کو چیئرمین سینیٹ کامیاب کرانے کیلئے دوسری جماعتوں سے رابطہ کرے گی اس حوالے سے خورشید شاہ ، راجہ پرویز اشرف اور قمر زمان کائرہ پر مشتمل تین رکنی کمیٹی بنائی گئی اس کمیٹی نے رات گئے مولانا فضل الرحمن سے ملاقات بھی کی اورچیئرمین سینیٹ کے انتخابات میں رضا ربانی کی حمایت کی درخواست کی ۔ دریں اثناءآصف علی زرداری نے جماعت اسلامی کے امیر سراج الحق سے ٹیلیفون پر رابطہ کیا اور چیئرمین سینیٹ کے انتخابات میں ان سے تعاون مانگ لیا ۔ ادھر پیپلزپارٹی نے پیر کے روز زرداری ہاﺅس میں اہم اجلاس طلب کر لیا ہے جس میں رضا ربانی کو چیئرمین سینیٹ کا امیدوار نامزد کرنے کا قوی امکان ہے اس سے پہلے سابق صدر آصف علی زرداری اشارہ دے چکے ہیں چیئرمین سینیٹ کےلئے پیپلزپارٹی کے رضا ربانی اپوزیشن کے مشترکہ امیدوار ہو سکتے ہیں ، دوسری طرف وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات پرویز رشید نے کہا ہے کہ حکومت کے پاس آپشن کھلے ہیں سیاسی جماعتوں سے مشاورت کے بعد چیئرمین سینیٹ کے امیدوار کا اعلان کیا جائیگا اور اس سلسلے میں آئندہ 48گھنٹوں میں حکومت فیصلہ کر لے گی ، چیئرمین اور ڈپٹی چیئرمین سینیٹ کے انتخاب کے لئے سیاسی جماعتوں سے رابطوں کا پہلا راﺅنڈ جاری ہے اور حکومت کی خواہش ہے کہ ان دونوں عہدوں پر اتفاق رائے سے امیدوار لائے جائیں آج مشاورت جاری رہے گی ، کل (بروزمنگل)حکومت اس پوزیشن میں ہو گی کہ بتا سکے کہ اپنے اپنے امیدوار آ رہے ہیں یا بلا مقابلہ اتفاق رائے سے انتخاب عمل میں لایا جا رہا ہے انہوں نے کہا کہ پیپلزپارٹی سے بھی بالواسطہ رابطے جاری ہیں ۔

چینی صدر 23مارچ کو پاکستان نہیں آرہے:سرتاج عزیز

دریں اثناءبعض ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ حکومت حاصل بزنجو کو چیئرمین سینٹ کا امیدوار لانے کیلئے لابنگ کر رہی ہے بلوچ رہنما کو قوم پرست جماعتوں کی حمایت حاصل کرنے کا ٹاسک دیدیا گیا ہے ۔ مسلم لیگ (ن)کی طرف سے اسحق ڈار اور پرویز رشید نے بھی امیر جماعت اسلامی سراج الحق سے رابطہ کیا ، خواجہ سعد رفیق نے اے این پی کے رہنما امیر حیدر ہوتی کو ٹیلیفون کیا اور چیئرمین اور ڈپٹی چیئرمین سینٹ کے انتخابات کے لئے مشاورت کی ۔ دوسری طرف آصف علی زرداری نے اسفند یار ولی سے ٹیلیفون پر رابطہ کیا۔دریں اثناءوزیر اعظم نوازشریف اور وزیراعلی شہبا زشر یف نے چیئرمین و ڈپٹی چیئرمین سینیٹ کے انتخابات کےلئے ایم کیو ایم  ،اے این پی سمیت تمام سیاسی جماعتوں سے رابطوں کا فیصلہ کر لیا ہے دونوں قائدین نے اتحادی جماعتوں سے مکمل مشاورت کے ساتھ چیئرمین وڈپٹی چیئرمین سینیٹ  امیدواروں کے نا م فائنل کر نے پر اتفاق کیا ہے ۔

سینیٹ الیکشن کے دوران خیبر پختونخواہ میں باہر سے پرچیاں منگوا کر ووٹ کی تذلیل کی گئی : قمر الزمان کائرہ

اتوار کے روز وزیر اعلی شہبا زشر یف وزیر اعظم نوازشر یف سےجاتی عمرہ میں ملاقات کی جس میں دونوں قائدین نے سینیٹ انتخابات میں (ن) لیگ کی کا میابی پر ایک دوسرے کو مبارکباد دی اور ملک کی موجودہ سےاسی صورتحال او ر سینیٹ انتخابات کے حوالے سے مشاورت کی جس کے بعد فیصلہ کیا گیا ہے کہ چیئرمین  وڈپٹی چیئرمین کے امیدوارو ں کیلئے اتحادی جماعتوںسے مشاورت کی جائے گی جبکہ اس کےلئے سینیٹ میں موجود اے این پی‘ایم  کیو ایم  اور جماعت اسلامی سمیت دیگر جماعتوں سے بھی رابطے کیے جائیں گے جس کے لیے وزیر اعلی شہبا زشر یف‘وفاقی وزیر خزانہ سےنےٹر اسحاق ڈار ‘وفاقی وزرائ پرویز رشیداور خواجہ سعد رفیق کو بھی سےاسی ومذہبی جماعتوں سے رابطوں کی ہدایت کردی گئی ہے ملاقات کے دوران گفتگو کرتے ہوئے وزےر اعظم نوازشر یف نےکہا کہ (ن) لےگ نے ہمیشہ ملک وقوم کے مفادات کو سامنے رکھتے ہوئے سیاست کی ہے اور سینیٹ انتخابات میں پنجاب میں (ن) لیگ کاکلین سویپ بھی ہماری اصولی اور عوامی سیاست کی فتح ہے ۔ انہوں نے کہا کہ حکو مت عوام کودہشت گردی ‘ بجلی کی لوڈشےڈ نگ سمیت تمام مسائل سے نجات دلانے کےلئے اقدامات کر رہی ہے او ر دنیا کی کوئی طاقت ملک میں امن، ترقی وخوشحالی کو نہیں  روک سکتی اور پاکستان میں ہر آنےوالا دن ملک میں تر قی وخوشخالی لے کرآئے گااور (ن) لیگ قوم سے کیے جانےوالا ہر وعدہ پورا کر ےگی ۔

مزید :

اسلام آباد -اہم خبریں -