بنگلا دیش میں مذہب اسلام کی سرکاری حیثیت ختم کرنے کی کوشش

بنگلا دیش میں مذہب اسلام کی سرکاری حیثیت ختم کرنے کی کوشش

ڈھا کہ(آن لائن)بنگلادیش میں اسلامی تشخص کو ختم کرنے کی کوششیں کی جارہی ہیں۔ اس سلسلے میں سپریم کورٹ میں ملک کے سرکاری مذہب اسلام کو ختم کرنے کیلئے درخواست دائرکردی گئی ہے۔برطانوی میڈیا کے مطابق دنیا کے تیسرے بڑیاسلامی ملک بنگلا دیش کی اسلامی شناخت ختم کرنے کی تیاریا ں شروع کردی گئیں۔ بنگلادیش میں اقلیتوں کے خلاف حملوں کے بعد اسلام کو بطور سرکاری مذہب کی حیثیت ختم کیے جانے کا امکان ہے۔حکومت کے کچھ حامی عناصر اور اقلیتی مذاہب کے پیروکاروں کی طرف سے اسلام کو بنگلادیش کا سرکاری مذہب ختم کرنے کیلئے سپریم کورٹ میں درخواست دائر کی گئی ہے۔سوشل میڈیا میں اس سلسلے میں مہم جاری ہے۔بنگلادیش 1988تک سرکاری طور پر ایک سیکولر اسٹیٹ تھی۔حسین محمد ارشاد کی فوجی حکومت نے ا?ٹھویں ترمیم کے تحت اسلام کو ملک سرکاری مذہب قراردیا تھا۔درخواست کی سماعت رواں ماہ27تاریخ کو ہوگی۔

مزید : عالمی منظر