مسئلہ فلسطین پر او آئی سی کا جکارتہ میں غیر معمولی اجلاس

مسئلہ فلسطین پر او آئی سی کا جکارتہ میں غیر معمولی اجلاس

جکارتہ( آن لائن )فلسطین امن عمل پر اسلامی ملکوں کی تعاون تنظیم او آئی سی کا پانچواں غیرمعمولی اجلاس انڈونیشیا میں ہوا۔سیکریٹری جنرل او آئی سی ایاد بن امین مدنی کا کہنا تھا کہ اسرائیلی جارحیت سے عالمی امن متاثر ہورہاہے۔ مسلمان ملکوں کو مسئلہ فلسطین پر کردار ادا کرنا ہوگا۔ فلسطینی صدر نے مسلم ملکوں سے القدس فنڈ قائم کرنے کی اپیل کی۔اوآئی سی کے پانچ ویں غیر معمولی اجلاس کے لیے 49 ملکوں کے سربراہ اور نمائندے جکارتا میں جمع ہیں۔اجلاس سے خطاب میں فلسطینی صدر محمود عباس نے کہا کہ اسرائیل کو یہودی بستیوں کی تعمیر روکنا ہوگی،اس سلسلے میں اسرائیل نے بین الاقوامی معاہدے کی پاسداری نہیں کی،مسلمان ملک فلسطین کا تشخص برقراررکھنے کیلئے جدوجہد تیز کریں۔انڈونیشیا کے صدر کاکہنا تھاکہ اوآئی سی مسئلے کے حل کیلئے کردارادانہیں کرسکتی تو اسکے وجودکافائدہ نہیں۔او آئی سی کے سیکرٹری جنرل ایاد بن امین نے کہا کہ اسرائیلی جارحیت سے عالمی امن متاثر ہورہاہے، مسلمان ملکوں کو مسئلہ فلسطین پر کردار ادا کرنا ہوگا۔ او آئی سی فلسطین میں قومی حکومت کی تشکیل کی حمایت کرتی ہے۔ علا وہ ازیں فلسطینی صدر محمود عباس نے انڈونیشیا کے صدرسے جکارتا میں ملاقات بھی کی۔ ملاقات میں دونوں رہنماؤں نے فلسطین میں قیام امن کے حوالے سے بات چیت کی۔ صدر ودودو نے محمود عباس کو فلسطین کی علاقائی اور عالمی سطح پر حمایت کی یقین دہانی کروائی۔ فلسطینی صدر اسلامی ملکوں کی تنظیم او آئی سی کے اجلاس میں شرکت کے لئے جکارتا میں ہیں ۔

مزید : عالمی منظر


loading...